چوری کا الزام لگا کر بھارت میں نوجوان مسلمان پر سرعام خوفناک تشدد، جان سے ہاتھ دھو بیٹھا

چوری کا الزام لگا کر بھارت میں نوجوان مسلمان پر سرعام خوفناک تشدد، جان سے ...
چوری کا الزام لگا کر بھارت میں نوجوان مسلمان پر سرعام خوفناک تشدد، جان سے ہاتھ دھو بیٹھا

  


نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارت میں گزشتہ روز چوری کا الزام لگا کر ایک مسلمان نوجوان پر بہیمانہ تشدد کیا گیا تھا جو آج ہسپتال میں دم توڑ گیا۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ واقعہ بھارتی ریاست جھاڑ کھنڈ میں پیش آیا جہاں انتہاءپسند ہندوﺅں کے ایک گروپ نے اس نوجوان پر چوری کا الزام عائد کرکے سرعام تشدد کیا اور اسے ’جے شری رام‘ اور جے ہنومان‘ جیسے نعرے لگانے پر بھی مجبور کرتے رہے۔

رپورٹ کے مطابق اس 24سالہ مسلمان نوجوان کا نام تبریز انصاری تھا، جسے انتہا پسند ہندو ایک یا دو گھنٹے نہیں بلکہ 18گھنٹے تک تشدد کا نشانہ بناتے رہے ۔ اس دوران سینکڑوں لوگ یہ سب کچھ اپنی آنکھوں کے سامنے دیکھتے رہے اور کسی نے پولیس کو اطلاع تک نہ کی۔ انتہاءپسندوں نے ادھ موا کرنے کے بعد تبریز انصاری کو پولیس کے حوالے کر دیا جو اسے ہسپتال لے گئی، جہاں آج وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔پولیس نے اب تک تبریز کو تشدد کا نشانہ بنانے والوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی تھی تاہم اب اس کی موت کے بعد پپو منڈل نامی ایک ملزم کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی