ریلوے ورکرز یونین نے حالیہ بجٹ کو مزدور دشمن قراردیکر مسترد کر دیا

ریلوے ورکرز یونین نے حالیہ بجٹ کو مزدور دشمن قراردیکر مسترد کر دیا

  

لاہور(لیڈی رپورٹر)ریلوے ورکرز یونین(سی بی اے) نے مالی سال2020-21 کے وفاقی بجٹ کو مزدور دشمن قرار دیکر مسترد کردیا ہے جبکہ وفاقی حکومت سے ریلوے ملازمین کی تنخواہوں اور پینشن میں پچاس فیصد اضافے کا مطالبہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ریلوے ورکرز یونین(سی بی اے) کے زیر اہتمام گزشتہ روز کیرج شاپ کے باہر گیٹ میٹنگ ہوئی جس کی صدارت ریلوے ورکرز یونین(سی بی اے) کے مرکزی صدر میاں خالد محمود نے کی،میٹنگ میں مرکزی جنرل سیکرٹری رانا معصوم علی،مرکزی فنانس سیکرٹری اشرف کمبوہ،سینئر نائب صدور شہزادہ جاوید اختر،راجہ رضوان ستی ودیگر نے شرکت کی۔

،مرکزی جوائنٹ سیکرٹری جماعت علی،کیرج شاپ کے صدرکامران بٹ،جنرل سیکرٹری محمد رمضان،ریلوے لیبر یونین کے عہدیدران سرفراز خان اورعنائت علی گجر،ڈپلومہ فیڈریشن کے صدر محمود ننگیانہ،سپر وائزر ایسوسی ایشن کے صدر عرفان منیر اور کیرج شاپ یونٹ کے سیکرٹری انفارمیشن امجد اقبال زیدی نے شرکت کی۔ گیٹ میٹنگ کے بعد ریلوے ورکرز یونین(سی بی اے) کے مرکزی صدر میاں خالد محمود نے ریلوے ورکرز سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی حکومت سے مطالبات کئے کہ ایڈھاک ریلیف کو بنیادی تنخواہ میں ضم کرکے مہنگائی کے تناسب سے ریلوے ملازمین کی تنخواہوں میں پچاس فیصد اضافہ کیا جائے،بیواؤں اور ریٹائرڈ ملازمین کی پینشن میں بھی پچاس فیصد اضافہ کیا جائے،ٹی ایل اے اور وزیر اعظم اسٹنسٹ پیکیج کے بچوں کو کنفرم کیا جائے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -