بلوچستان میں کارڈیالوجی ہسپتال، ریسکیو 1122منصوبے مکمل کرینگے: عثمان بزدار

  بلوچستان میں کارڈیالوجی ہسپتال، ریسکیو 1122منصوبے مکمل کرینگے: عثمان بزدار

  

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے وزیر اعظم کے معاون خصوصی اور بلوچستان کے وزیر تعلیم سردار یار محمد رندنے ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ آفس میں ہونے والی ملاقات میں بین الصوبائی ہم آہنگی اور صوبوں کے درمیان تعلقات میں فروغ کیلئے باہمی رابطے بڑھانے پر اتفاق کیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ترقی اور خوشحالی کے سفر میں دونوں صوبے قدم سے قدم ملا کر آگے بڑھیں گے۔ بلوچستان کے لوگ محب وطن اور محنتی ہیں۔ پنجاب حکومت بلوچستان کی ترقی کیلئے ہر ممکن تعاون جاری رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان میرے دل کے بہت قریب ہے اور بلوچستان کی ترقی پاکستان کی ترقی ہے۔ پاکستان کی تعمیر و ترقی کے لئے ملکر کام کرنے کی ضرورت پہلے سے کہیں زیادہ بڑھ گئی ہے۔ بلوچ بہن بھائیوں کی جو بھی خدمت ہو گی پنجاب پیچھے نہیں رہے گا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ اوکاڑہ میں میر چاکراعظم رند کے مقبرے کی اصل حالت میں بحالی کیلئے فنڈز مہیا کر دیئے ہیں اور بحالی کے کام کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ میر چاکراعظم رند کے تاریخی مقبرے کو اصل حالت میں بحال کیا جائے گا۔ مقبرے کے ساتھ بنائی ہوئی دیوار کو ہٹا کر احاطہ کو وسیع کیا جائے گا۔ مقبرہ میر چاکراعظم کی دیواروں اور بنیادوں کو محفوظ کیا جائے گا۔ میر چاکر اعظم رند کے تاریخی مقبرے کے ساتھ ریسٹ ہاؤس اور میوزیم بنایا جائے گا۔ مقبرے سے ملحقہ سڑکوں کی ترجیحی بنیادوں پر بحالی و مرمت کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اوکاڑہ کے نواح میں ست گرہ کو سٹیٹ آف دی آرٹ سیاحتی مقام بنایا جائے گا۔ ست گرہ قلعہ،مچلز فارم اورسرگنگا رام کا بنایا ہوا ہائیڈرو الیکٹرک پاور سٹیشن سیاحوں کی دلچسپی کا باعث ہو گا۔ تاریخی حیثیت کو بحال رکھنا آثارقدیمہ کی حفاظت کا اولین تقاضا ہے۔ ست گرہ گاؤں میں رابطہ سڑکیں اور سیوریج سسٹم بنایا جا رہا ہے اور اس اقدام سے بلوچ بہن بھائیوں کو خیر سگالی کا پیغام دیا گیا ہے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ بلوچستان کی ترقی کے لئے بھرپور کردار ادا کریں گے۔ حکومت پنجاب بلوچستان میں کارڈیالوجی ہسپتال، ریسکیو1122 اور دیگر منصوبے مکمل کرے گی۔ بلوچستان میں پراجیکٹس کے آغاز سے تکمیل تک ہر مرحلے میں بھرپور معاونت کریں گے۔ ڈیرہ غازی خان میں میر چاکراعظم رند ٹیکنیکل یونیورسٹی بھی قائم کی گئی ہے۔ سردار عثمان بزدارکی زیر صدارت وزیر اعلی آفس میں اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں صوبے میں گندم اور آٹے کی قیمتوں میں استحکام کے لئے اقدامات کا جائزہ لیا گیااور فلورملوں کو گندم ریلیز کرنے کے حوالے سے مختلف آپشن پر غور کیا گیا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پنجاب کابینہ سے فلور ملوں کو گندم ریلیز کرنے اور حتمی قیمت مقرر کرنے کی منظوری لی جائے گی اورکابینہ کی منظوری کے بعد فلور ملوں کو کابینہ کی جانب سے مقرر کردہ قیمت پر گندم مہیا کی جائے گی۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ پنجاب حکومت کے پاس گندم کے وافر ذخائر موجود ہیں۔ مارکیٹ میں گندم کی قیمت میں استحکام کے لئے ہر ممکن اقدام اٹھائیں گے۔ آٹے کی قیمت میں استحکام کے لئے ہر ممکن آپشن کا جائزہ لے کر فیصلہ کیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے ہدایت کی کہ گندم اور آٹے کی قیمتوں کو عام آدمی کی پہنچ میں رکھنے کیلئے ضروری اقدامات کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے رواں سیزن کے دوران ریکارڈ گندم خریدی ہے۔ اجلاس میں وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو گندم اور آٹے کی قیمتوں اور دستیابی کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔ سینئر وزیر عبدالعلیم خان، چیف سیکرٹری، سیکرٹری خوراک، وزیراعلیٰ کے سیکرٹری کوآرڈینیشن، ڈائریکٹر فوڈ اور ڈپٹی کمشنر لاہور نے اجلاس میں شرکت کی۔

عثمان بزدار

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پنجاب میں روزانہ کی بنیاد پر کورونا کے ٹیسٹ کی استعداد کار 12 ہزار ہو گئی ہے۔ پنجاب میں کورونا مریضوں کی مجموعی تعداد اب تک 68,308 ہے جبکہ 19,580 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں اور گزشتہ 3 روز میں تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد میں کمی آئی ہے اور اس وقت پنجاب کے ہسپتالوں میں 3498 مریض زیرعلاج ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لاہور کے ہسپتالوں میں ہائی ڈیپنڈنسی یونٹس کی تعداد 671 سے بڑھا کر 1228 کردی گئی ہے۔راولپنڈی کے ہسپتالوں میں آکسیجن بیڈز کی تعداد 227 سے بڑھا کر 607 کی جا رہی ہے۔ نشتر ہسپتال ملتان میں کورونا مریضوں کیلئے مزید 58 بیڈز کا اضافہ کیا گیا ہے اور اب بیڈز کی تعداد 144 سے بڑھ کر 202 ہو گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کے تعاون سے میو ہسپتال لاہور، نشتر ہسپتال ملتان، یورالوجی ہسپتال راولپنڈی، سوشل سکیورٹی ہسپتال لاہور اور پی کے ایل آئی لاہور میں 66 وینٹی لیٹرز فراہم کئے گئے ہیں۔عالمی ادارہ صحت کی طرف سے عطیہ کردہ 3 پی سی آر مشینیں جناح ہسپتال لاہور، قائداعظم میڈیکل کالج بہاولپور اور شیخ زید ہسپتال رحیم یار خان کو مہیا کی گئی ہیں۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ کورونا مریضوں کی دیکھ بھال کیلئے 473 اضافی ڈاکٹروں، 674 نرسوں اور 211 ہیلتھ پروفیشنلز کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔ کورونا ڈیوٹی کرتے ہوئے جاں بحق ہونے والے گریڈ 16 تک کے ملازمین کے لواحقین کو 40 لاکھ روپے کی مالی امداد دی جائے گی اور گریڈ 17 اور اس سے زیادہ گریڈ کے افسران کے لواحقین کو شہید پیکیج کے تحت 80 لاکھ روپے کی مالی امداد دیں گے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے ایکٹمرا انجکشن اور دیگر ضروری ادویات ذخیرہ کرنے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن جاری رکھنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ اور متعلقہ ادارے ذخیرہ اندوزوں کے خلاف بلاامتیاز کارروائی کرکے رپورٹ پیش کریں۔صوبائی وزراء ڈاکٹر یاسمین راشد، میاں اسلم اقبال،فیاض الحسن چوہان، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پنجاب، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، متعلقہ سیکرٹریز، کمشنر لاہور ڈویژن اور اعلیٰ حکام نے وزیراعلیٰ آفس سے اجلاس میں شرکت کی جبکہ عسکری حکام اور سیکرٹری بلدیات، سیکرٹری ٹرانسپورٹ، سیکرٹری ہائر ایجوکیشن، سیکرٹری لائیوسٹاک، ڈی جی پی ڈی ایم اے اور متعلقہ حکام ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔

کریک ڈاؤن

مزید :

صفحہ اول -