بزنس کمیونٹی کا معاشی ترقی میں کلیدی کردار ہے،امجد علی خان

بزنس کمیونٹی کا معاشی ترقی میں کلیدی کردار ہے،امجد علی خان

  

پشاور(سٹی رپورٹر)کمشنر پشاور امجد علی خان نے کہا ہے کہ بزنس کمیونٹی ملک کی معاشی ترقی میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے اور حکومت انہیں ہر ممکن سہولیات کی فراہمی کے لئے اقدامات کر رہی ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت کی بھرپور کوشش ہوتی ہے کہ ایسے اقدامات سے گریز کیا جائے جس کے ذریعے تاجر برادری اور کاروباری و تجارتی سرگرمیاں متاثر نہ ہوں تاہم ایس او پیز پر عملدرآمد کوبھی ہر صورت پر یقینی بنایا جائے گا جبکہ سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے قائمقام صدر شاہد حسین نے کورونا لاک ڈان کو مکمل ختم کرنے کے ساتھ ساتھ کارپوریشن کے جائیدادوں کے کرایوں کے اضافہ کو واپس لینے شادی ہالوں بینکویٹ ہالوں کو مربوط ایس او پیز کے تحت کھلنے بی آر ٹی سے متاثرہ بزنس کمیونٹی کو ریلیف فراہم کرنے ایس او پیز کی آڑ میں مختلف بازاروں میں دکانداروں کو ناجائز طور پر ہراساں نہ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق کمشنر پشاور امجد علی خان نے گذشتہ روز ا یڈیشنل ڈپٹی کمشنر اشفاق خان کے ہمراہ سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا دورہ کیا اور سرحد چیمبر کے قائمقام صدر شاہد حسین کی زیر صدارت اجلاس میں شرکت کی۔ اس موقع پر سرحد چیمبر کے وائس پریذیڈنٹ عبدالجلیل جان ایف پی سی سی آئی کے سابق صدر غضنفر بلور سرحد چیمبر کے سابق صدور حاجی محمد افضل فیض محمد فیضی سرحد چیمبر اور پاک افغان جائنٹ چیمبر کے سابق سینئر نائب صدر اور فرنٹیئر کسٹمز ایجنٹس ایسوسی ایشن کے صدر ضیا الحق سرحدی سرحد چیمبر لا اینڈ آرڈرز کمیٹی کے چیئرمین شوکت علی خان سابق سینئر نائب صدر عابد اللہ خان یوسفزئیچیمبر کی ایگزیکٹو کمیٹی کے اراکین آفتاب اقبال مجیب الرحمان احسان اللہ غلام بلال جاوید اور جاوید اختر صدر گل فیض رسول راشد اقبال صدیقی وقار احمد نثار احمد عبدالرزاقاشتیاق احمد اور محمد ایاز سمیت تاجر رہنما اور صنعتکار بھی موجود تھے۔ ایف پی سی سی آئی کے سابق صدر غضنفر بلور نے کہا کہ کورونا لاک ڈان ایس او پیز پر عملدرآمد کے لئے تاجر برادری ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مکمل عمل درآمد کے لئے تعاون کرنے کے لئے تیار ہے لیکن بھاری پولیس کی نفری اور اہلکاروں کے ذریعے دکانوں پر ایس او پیز کی چیکنگ ہر گزقابل قبول نہیں ہے۔ انہوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ کارپوریشن کی جائیددوں میں بے تحاشا اضافہ کو فوری واپس لیا جائے۔ سرحد چیمبر کی لا اینڈ آرڈر سٹینڈنگ کمیٹی کے چیئرمین شوکت علی خان نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ کورونا لاک ڈان کو ختم کرکے تاجر برادری کو ہفتہ اور اتوار کو بھی کاروبار کرنے کی اجازت دی جائے۔ انہوں نے کارپوریشن کی جائیدادوں کے کرایوں میں 100 سے 200فیصد تک اضافہ کورونا لاک ڈان سے متاثرہ بزنس کمیونٹی کے ساتھ سراسر ناانصافی اور زیادتی ہے اور مطالبہ کیا اس پر نظرثانی کرکے واپس لیا جائے۔ سرحد چیمبر کے سابق صدر حاجی محمد افضل نے کہاکہ تاجر برادری حکومت اور ضلعی انتظامیہ کے ساتھ کورونا SOPs پر عملدرآمد کرنے کے لئے مکمل تعاون کرنے کے لئے تیار ہے لیکن تاجر برادری کی عزت نفس کا خیال رکھا جائے اور انہیں مختلف طریقوں سے ہراساں نہ کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ کارپوریشن کی جائیدادوں میں بے تحاشا کرایوں میں اضافہ واپس لینا کا مطالبہ کیا۔ ضیا الحق سرحدی نے حکومت کی جانب سے طورخم اور غلام خان بارڈرز کو تجارت کے لئے کھولنے کا خیر مقدم کیا اور کہاکہ اس اقدام سے پاکستان و افغانستان سمیت وسطی ایشیا کے ممالک کے درمیان باہمی تجارت میں اضافہ ہوگا۔ کمشنر پشاور امجد علی خان نے کہا کہ صوبائی حکومت نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی وزیراعظم عمران خان کی سربراہی میں ہونیوالے فیصلوں کی روشنی میں کورونا کے تدارک و روک تھام کے لئے اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سمارٹ لاک ڈان کے خاتمہ کے بعد ہی شادی ہالز بینکویٹ ہالز کے کھلنے کے حوالے سے فیصلہ کیا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ حکومت معیشت کی ترقی کے لئے کاروباری اور تجارتی سرگرمیوں کو فروغ دینے کے لئے خواہاں ہے لیکن کورونا SOPs کے عملدرآمد کو بھی ہر صورت یقینی بنانے کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے یقین دلایا کہ کارپوریشن کے کرایوں کے اضافہ کے حوالے سے ڈپٹی کمشنر پشاور سے بات کروں گا۔ انہوں نے کہاکہ پرائیویٹ سکولز پرSOPs کا نافذ قابل عمل نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ اگر کورونا وائرس کی وبا نہ آئی ہوتی تو پشاور بس ٹرانزٹ منصوبہ مکمل ہوجاتا۔ انہوں نے کہاکہ ہفتہ اور اتوار لاک ڈان این سی سی کے احکامات کی روشنی میں کیا جا رہا ہے اس بارے میں این سی سی یہ فیصلہ کرے گی۔ اس موقع پر سرحد چیمبر کی ایگزیکٹو کمیٹی کے ممبران آفتاب اقبال مجیب الرحمان غلام بلال جاوید اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -