بڑے شہروں میں مویشی منڈیو پر پابندی،لاہور سمیت صوبے کے مزید 33مقامات بند کرنے کا فیصلہ، کورونا سے مزید 81افراد جان کی بازی ہار گئے، 3198نئے کیسز رپورٹ

بڑے شہروں میں مویشی منڈیو پر پابندی،لاہور سمیت صوبے کے مزید 33مقامات بند ...

  

لاہور، اسلام آباد، کراچی (جنرل رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے خطرے کے پیش نظر پنجاب کے بڑے شہروں کے اندر مویشی منڈیاں نہ لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پنجاب حکومت نے لاہور شہر میں مویشی منڈی لگانے پر پابندی عائد کردی ہے اور شہر وں سے باہرکم آبادی والے علاقوں میں منڈیوں کے قیام کی تجویز دی گئی ہے، شہری قربانی کے جانور کیسے خریدیں گے اس حوالے سے سفارشات مرتب کرنے کا کام جاری ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ جانوروں کی خریدوفروخت کیلئے چند روز میں ایس اوپیز وضع کیے جائیں گے۔خیال رہے کہ صوبہ پنجاب کا شہر لاہور کورونا سے سب سے زیادہ متاثر ہے جس کی وجہ سے وہاں بیشتر علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن بھی کیا گیا ہے۔دوسری طرف سمارٹ لاک ڈاؤن کے تحت لاہور سمیت پنجاب کے مزید 33 مقامات سیل کرنے کی منظوری دے دی گئی، لاہور میں 8 مقامات کو سیل کیا جائے گا۔ چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق ملک کی سربراہی میں پنجاب کے مزید 33 مقامات سیل کرے کا فیصلہ ہوا، جواد رفیق نے کورونا سے نمٹنے کیلئے ایس او پیز پر ہر صورت عملدرآمد کا حکم دیتے ہوئے کہا ایس او پیز پر عملدرآمد نہ کرنے پر سخت ایکشن لیا جائے۔ذرائع کے مطابق گلبرگ، ماڈل ٹاؤن، ڈی ایچ اے، گلشن راوی کو بند کرنے پر اتفاق کیا گیا، فیصل ٹاؤن، گارڈن ٹاؤن، اندرون شہر والڈ سٹی کو مکمل بند کیا جائے گا۔ان علاقوں سے 3 ہزار 613 مریض رپورٹ ہوئے۔ متاثرہ علاقوں میں 96 ہزار 229 گھر اور 2 لاکھ 33 ہزار خاندان رہائش پذیر ہیں۔ ڈی ایچ اے میں 1403 مریض سامنے آئے جہاں 22 ہزار 405 گھر اور 44 ہزار 810 فیملیز رہائش پذیر ہیں۔گلبرگ کے تمام بلاکس سے 736 کنفرم کورونا کیسز رپورٹ ہوئے جہاں 19 ہزار 363 گھر، 46 ہزار 471 خاندان رہائش پذیر ہیں۔ گلبرگ کی آبادی 2 لاکھ 50 ہزار 943 افراد پر مشتمل ہے۔ماڈل ٹاؤن میں 659 کنفرم کورونا کیسز سامنے آئے جہاں 6 ہزار 876 گھر، 15 ہزار 127 خاندان رہائش پذیر ہیں۔ ماڈل ٹاؤن کی آبادی 93 ہزار 778 افراد پر مشتمل ہے۔اسی طرح فیصل ٹاؤن میں کورونا کے 188 کیسز رپورٹ ہوئے جہاں 6 ہزار 699 گھر اور 15 ہزار 407 فیملیز رہائش پذیر ہیں۔ فیصل ٹاؤن کی آبادی 67 ہزار 791 افراد پر مشتمل ہے۔گارڈن ٹاؤن میں 238 مریض سامنے ا?ٓئے جہاں 8 ہزار 95 گھر اور 17 ہزار فیملیز رہائش پذیر ہیں۔ گارڈن ٹاؤن کی آبادی 83 ہزار 307 افراد پر مشتمل ہے۔گلشن راوی میں 212 مریض سامنے آئے جہاں 7 ہزار 842 گھر اور 19 ہزار 605 فیملیز رہائش پذیر ہیں۔ گلشن راوی کی آبادی 72 ہزار 315 افراد پر مشتمل ہے۔والڈ سٹی میں 170 مریض رپورٹ ہوئے جہاں 24 ہزار 948 گھر اور 74 ہزار 844 فیملیز رہائش پذیر ہیں۔ والڈ سٹی کی آبادی 2 لاکھ 99 ہزار 276 افراد پر مشتمل ہے۔اندرون شہر کی اکبر منڈی اور شاہ عالم مارکیٹ کھلی رہے گی۔ اعظم مارکیٹ، رنگ محل و دیگربازاروں کو بند کرنے بارے چیف سیکرٹری اور کمشنر اجازت دیں گے۔مکمل لاک ڈاؤن ہونے والیعلاقوں میں شاپنگ مالز اور کاروباری سرگرمیاں بند رہیں گی۔پنجاب حکومت نے کورونا کے باعث بند علاقوں کے رہائشیوں کے لئے بڑا اقدام کیا ہے سمارٹ لاک ڈاؤن کے تحت بند علاقوں کے رہائشیوں کو چھٹی کی وجہ سے ملازمتوں سے نہیں نکالا جائے گا۔پنجاب حکومت نے شہریوں کی سہولت کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا، نوٹیفکیشن کے مطابق نجی ادارے ملازمین کو نوکری سے نکالیں گے نہ ہی تنخواہ میں کٹوتی کریں گے، نجی ادارے، دکان، فیکٹری یا مل مالک نے ملازم کو نوکری سے نکالا تو کارروائی ہوگی۔دریں اثناملک کے مختلف حصوں میں ہیلتھ گائیڈ لائینز پر عمل درآمد یقینی بنانے کے لیے کارروائیاں منگل کو بھی جاری رہیں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مْلک بھر میں مجموعی طور پر ایس او پیز کی 9532 خلاف ورزیاں رپورٹ ہوئیں،874 دکانیں، ایک انڈسٹری،1408 گاڑیاں سیل، جرمانے عدائد کئے گئے،آزاد کشمیر میں 585 خلاف ورزیاں 155 گاڑیاں اور 67 دکانیں سیل جرمانے عائد کئے گئے،گلگت بلتستان میں 156 خلاف ورزیاں، 20 گاڑیاں،34 دکانیں سیل جرمانے عائد کئے گئے،خیبر پختونخواہ میں 4479 خلاف ورزیاں،105 گاڑیاں اور 213 دکانیں سیل جرمانے عائد کئے گئے،پنجاب میں 2445 خلاف ورزیاں،1 کارخانہ،820 گاڑیاں اور 387 دکانیں سیل جرمانے عائد کئے گئے،بلوچستان میں 818 خلاف ورزیاں،121 دکانیں، 294 گاڑیاں سیل جرمانے عائد کئے گئے،سندھ میں 100 خلاف ورزیاں،25 دکانیں، 5 گاڑیاں سیل جرمانے عائد کئے گئے،اسلام آباد میں 49 خلاف ورزیاں,27 دکانیں، 10 گاڑیاں سیل جرمانے عائد کئے گئے۔

لاک ڈاؤن

اسلام آباد، لاہور، کراچی، مظفر آباد(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) ملک میں کورونا سے مزید 81 افراد انتقال کر گئے جس کے بعد اموات کی مجموعی تعداد 3695 ہوگئی جب کہ نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مریضوں کی تعداد 185034 تک پہنچ گئی ہے۔اب تک پنجاب میں کورونا سے 1495 اور سندھ میں 1103 افراد انتقال کرچکے ہیں جب کہ خیبر پختونخوا میں 843 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔اس کے علاوہ بلوچستان میں 104، اسلام آباد میں 106، گلگت بلتستان میں 22 اور آزاد کشمیر میں مہلک وائرس سے 22 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔ بروز منگل ا ملک بھر سے کورونا کے مزید 3198 کیسز اور 81 ہلاکتیں سامنے آئیں جن پنجاب سے 1365 کیسز 60 ہلاکتیں، اسلام آباد 307 کیسز 5 ہلاکتیں، کشمیر 24 کیسز 2 ہلاکتیں اور گلگت سے 38 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔پنجاب سے کورونا کے مزید 1734 کیسز اور 60 ہلاکتیں سامنے آئی ہیں جن کی تصدیق پی ڈی ایم اے نے کی۔صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے مطابق صوبے میں کورونا کے کل کیسز کی تعداد 68308 اور اموت 1495 تک جا پہنچی ہے۔پی ڈی ایم اے کے مطابق پنجاب میں اب تک کورونا سے 19580 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔وفاقی دارالحکومت سیکورونا کے مزید 307 کیسز اور 5 اموات سامنے آئیں جس کی تصدیق سرکاری پورٹل پر کی گئی ہے۔پورٹل کے مطابق اسلام آباد میں کیسز کی مجموعی تعداد 11219 اور اموات 106 ہو چکی ہیں۔اسلام آباد میں اب تک کورونا وائرس سے 5012 افراد صحت یاب ہو چکے ہیں۔آزاد کشمیر سے بھی کورونا کے مزید 24 کیسز اور 2 ہلاکتیں سامنے آئی ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کی گئی ہیں۔پورٹل کے مطابق آزاد کشمیر میں کورونا کے کل کیسز کی تعداد 869 اور اموات کی تعداد 22 ہو گئی ہے۔سرکاری پورٹل کے مطابق آزاد کشمیر میں کورونا سے متاثرہ 350 افراد صحت یاب ہو چکے ہیں۔ گلگت بلتستان سے کورونا کے مزید 38 کیسز سامنے آئے ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کیے گئے ہیں۔۔سندھ سے کورونا کے مزید 1464 کیسز اور 14 ہلاکتیں رپورٹ ہوئی ہیں جن کی تصدیق وزیراعلیٰ سندھ نے کی۔مراد علی شاہ نے بذریعہ ٹوئٹر بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 9841 ٹیسٹ کیے گئے جن میں مزید 1464 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جب کہ 14 اموات بھی ہوئیں۔سندھ میں نئے کیسز کے بعد کورونا کے کل مریضوں کی تعداد 71092 اور ہلاکتیں 1103 ہوگئی ہیں۔

کورونا ہلاکتیں

نیویارک(این این آئی)دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 91 لاکھ 88 ہزار 363 تک جا پہنچی ہے جبکہ اس سے ہلاکتیں 4 لاکھ 74 ہزار 339 ہو گئیں۔کورونا وائرس کے دنیا بھر میں 37 لاکھ 76 ہزار 742 مریض اسپتالوں، قرنطینہ مراکز میں زیرِ علاج اور گھروں میں آئسولیشن میں ہیں، جن میں سے 57 ہزار 888 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 49 لاکھ 37 ہزار 282 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔امریکی ٹی وی کے مطابق امریکا تاحال کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے جہاں ناصرف کورونا مریض بلکہ اس سے ہلاکتیں بھی اب تک دنیا کے تمام ممالک میں سب سے زیادہ ہیں۔امریکا میں کورونا وائرس سے اب تک 1 لاکھ 22 ہزار 610 افراد موت کے منہ میں پہنچ چکے ہیں جبکہ اس سے بیمار ہونے والوں کی مجموعی تعداد 23 لاکھ 88 ہزار 153 ہو چکی ہے۔امریکا کے اسپتالوں اور قرنطینہ مراکز میں 12 لاکھ 62 ہزار 614 کورونا مریض زیرِ علاج ہیں جن میں سے 16 ہزار 510 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 10 لاکھ 2 ہزار 929 کورونا مریض اب تک شفایاب ہو چکے ہیں۔کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد کے حوالے سے ممالک کی فہرست میں برازیل دوسرے نمبر پر ہے جہاں کورونا کے مریضوں کی تعداد 11 لاکھ 11 ہزار 348 تک جا پہنچی ہے جبکہ یہ وائرس 51 ہزار 407 زندگیاں نگل چکا ہے۔کورونا وائرس سے روس میں کل اموات 8 ہزار 206 ہو گئیں جبکہ اس کے مریضوں کی تعداد 5 لاکھ 92 ہزار 280 ہو چکی ہے۔بھارت میں بھی کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے اور وہ اس فہرست میں چوتھے نمبر پر آ گیا ہے۔بھارت میں کورونا وائرس سے 14 ہزار 15 ہلاکتیں ہو چکی ہیں جبکہ اس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 4 لاکھ 40 ہزار 450 ہو گئی۔برطانیہ میں کورونا سے اموات کی تعداد 42 ہزار 647 ہوگئی جبکہ کورونا کے کیسز کی تعداد 3 لاکھ 5 ہزار 289 ہو چکی ہے۔سپین میں کورونا کے اب تک 2 لاکھ 93 ہزار 584 مصدقہ متاثرین سامنے آئے ہیں جب کہ اس وبا سے اموات 28 ہزار 324 ہو گئیں۔پیرو میں کورونا وائرس کے باعث 8 ہزار 223 ہلاکتیں اب تک ہو چکی ہیں جبکہ یہاں کورونا کیسز 2 لاکھ 57 ہزار 447 رپورٹ ہوئے ہیں۔اٹلی میں کورونا وائرس کی وبا سے مجموعی اموات 34 ہزار 657 ہو چکی ہیں، جہاں اس وائرس کے اب تک کل کیسز 2 لاکھ 38 ہزار 720 رپورٹ ہوئے ہیں۔ایران میں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی کل تعداد 9 ہزار 742 ہو گئی جبکہ کورونا کے کل کیسز 2 لاکھ 7 ہزار 525 ہو گئے۔جرمنی میں کورونا سے کل اموات کی تعداد 8 ہزار 969 ہو گئی جبکہ کورونا کے کیسز 1 لاکھ 92 ہزار 119 ہو گئے۔ترکی میں کورونا وائرس سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 4 ہزار 974 ہو گئی جبکہ کورونا کے کل کیسز 1 لاکھ 88 ہزار 897 ہو گئے۔

عالمی ہلاکتیں

مزید :

صفحہ اول -