سمارٹ لاک ڈاؤ ن کو موثر اور شہریوں کو تمام ضروریات زندگی کی اشیاء مہیا کی جائیں: تیمو ر جھگڑا

سمارٹ لاک ڈاؤ ن کو موثر اور شہریوں کو تمام ضروریات زندگی کی اشیاء مہیا کی ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)صوبائی دارالحکومت پشاور میں کورونا وباء کے پھیلاؤ کو روکنے اور اس کے تدارک کے لیے مختلف علاقوں میں نافذ کیے گئے سمارٹ لاک ڈاؤن کو مزید موثر بنایا جائے تاہم ان علاقوں کے مکینوں کو تمام ضروریات زندگی کی فراہمی بھی یقینی بنائی جائے۔ عوامی اجتماعات اور شہر کی بڑی مارکیٹوں اور شاپنگ مالز میں ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کرایا جائے۔ ان خیالات کا اظہار خیبرپختونخوا کے وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم خان جھگڑا نے پشاور میں سمارٹ لاک ڈاؤن کے حوالے سے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں سیکریٹری داخلہ اکرام اللہ خان، سیکرٹری ریلیف عابد مجید، اسپیشل سیکرٹری صحت میاں عادل اقبال، ڈپٹی کمشنر پشاور محمد علی اصغر، ایس ایس پی آپریشنز پشاور ظہور بابر آفریدی اور دیگر متعلقہ حکام نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں ڈی سی پشاور نے کورونا کے حوالے سے اب تک کی صورت حال پر بریفنگ دی۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ سمارٹ لاک ڈاؤن پشاور کے 14 مختلف علاقوں میں نافذ کیا گیا۔ ان میں حیات آباد کے 2 فیز، دانش آباد، راحت آباد اور سٹی کے چند علاقے شامل ہیں۔ ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ ان علاقوں میں تمام اشیائے ضروریہ کی فراہمی یقینی بنائی جا رہی ہے اور ایمرجنسی سروسز و ورکرز سمیت ملازمین کو آمدورفت کی اجازت دی گئی ہے۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ کورونا کے زیادہ کیسز رپورٹ ہونے پر پشاور کے 5 علاقے ہاٹ اسپاٹ قرار دیے گئے ہیں۔ سیکرٹری ریلیف عابد مجید کا کہنا تھا کہ سمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کرنے سے پہلے ان علاقوں کے رہائشیوں کو مساجد میں اعلانات، بینرز اور سوشل میڈیا سمیت دیگر ذرائع سے آگاہ کیا جائے۔ اسی طرح علاقائی اور محلوں میں بنائی گئی مقامی کمیٹیوں کو بھی اعتماد میں لیا جائے اور ان کے ذریعے عوام کو آگاہی دی جائے تاکہ عوام کا تعاون حاصل کیا جا سکے۔ اس موقع پر صوبائی وزیر صحت و خزانہ تیمور جھگڑا نے کہا کہ صوبے میں سب سے زیادہ کورونا کیسز پشاور میں رپورٹ ہو رہے ہیں۔ سمارٹ لاک ڈاؤن کا مقصد کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنا اور نئے کیسز کو کم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوامی اجتماعات اور جگہوں پر یہ وائرس سب سے زیادہ پھیل رہا ہے جسے روکنا بہت ضروری ہے۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ بڑی مارکیٹوں اور شاپنگ مالز میں ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کرایا جائے۔ مارکیٹس کے داخلی و خارجی راستوں اور ان کے اندر سماجی فاصلے سمیت ماسک اور سینیٹائزر کا استعمال یقینی بنایا جائے۔ تیمور جھگڑا نے ضلع انتظامیہ کو ہدایت کی کہ سمارٹ لاک ڈاؤن والے علاقوں میں تمام اشیائے ضروریہ کی فراہمی یقینی بنانے سمیت وہاں کے سٹورز اور دکانوں کو بلاتعطل سپلائی بحال رکھی جائے۔ متعلقہ حکام سمارٹ لاک ڈاؤن والے علاقوں کا صحیح ڈیٹا حاصل کریں اور اس کا مسلسل جائزہ لیتے رہیں۔ تیمور جھگڑا نے محکمہ صحت کے حکام کو ہدایت کی کہ گھروں میں آئسولیٹ ہونے والے مریضوں سے تواتر کے ساتھ رابطہ کریں۔ وزیرِ صحت و خزانہ تیمور جھگڑا نے اس عزم کا اظہار کیا کہ سمارٹ لاک ڈاؤن کو ہر لحاظ سے مؤثر بنایا جائے گا اور اس کے مقاصد حاصل کیے جائیں گے۔

مزید :

صفحہ اول -