پاکستان نے بھارت کو اسی کی ہی زبان میں جواب دیدیا ، پیغام پہنچا دیا

پاکستان نے بھارت کو اسی کی ہی زبان میں جواب دیدیا ، پیغام پہنچا دیا
پاکستان نے بھارت کو اسی کی ہی زبان میں جواب دیدیا ، پیغام پہنچا دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان نے بھارتی ہائی کمیشن کے عملے میں 50 فیصد کمی کا فیصلہ کرلیا اور اس حوالے سے بھارتی ناظم الامور کو آگاہ کردیا گیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق بھارتی ناظم الامور گوارو آہلووالیا کو دفتر خارجہ طلب کیا گیا اور بھارتی بے بنیاد الزامات کی مذمت کی گئی۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ بھارتی الزامات پاکستانی ہائی کمیشن کے اسٹاف میں کمی کیلئے محض بہانہ ہیں لہٰذا پاکستان ویانا کنونشن کی خلاف ورزی کے بھارتی الزامات یکسر مسترد کرتا ہے۔ ترجمان کے مطابق پاکستان نے بھی بھارتی ہائی کمیشن کے عملے میں 50 فیصد کمی کے فیصلے سے آگاہ کیا اور بھارتی ناظم الامور سے 7 روز میں اِس فیصلے پر عمل کرنے کے لیے کہہ دیاگیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ بھارتی الزامات مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہیں لہٰذا بھارت کے لیے بہتر ہوگا کہ جنوبی ایشیا کا امن داو¿پر لگانے کی بجائے اندرونی معاملات پر توجہ دے۔ترجمان کے مطابق پاکستان عالمی برادری کو بی جے پی حکومت کی غیرذمہ دارانہ پالیسیوں سے مسلسل آگاہ کرتا آرہا ہے۔

دوسری جانب وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاکستانی ہائی کمیشن کا عملہ واپس آئےگا تو بھارت کا عملہ بھی واپس جائے گا لہٰذا بھارت بھی اپنے ہائی کمیشن کے 50 فیصد عملے کی واپسی کا سامان باندھے۔انہوں نے کہا کہ بھارت جیسا کرے گا ویسا ہی جواب دیا جائے گا۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ چین کے ہاتھوں شرمندگی کے باعث بھارت منہ چھپاتا پھر رہا ہے، بھارت کے پاکستانی ہائی کمیشن کے عملے پر الزامات بے بنیاد ہیں اور اِن الزامات کو وزارت خارجہ نے مستردکردیا ہے۔

مزید :

قومی -