ایل پی جی کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ

ایل پی جی کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ

  

قدرتی گیس سے محروم شہری ایل پی جی کی مہنگائی کے باعث مزید مالی بوجھ کا شکار ہو گئے ہیں۔ بازار میں گزشتہ چار روز کے دوران ایل پی جی گیس کی قیمت میں تیسری بار اضافہ ہوا اور چھ روپے بڑھ جانے سے فی کلو قیمت 155 روپے ہو گئی ہے،مختصر عرصہ میں یہ اضافہ 40 روپے فی کلو ہے،جبکہ ایل پی جی ڈیلرز ایسوسی ایشن  کے چیئرمین عرفان کھوکھر کے مطابق30جون تک مزید 10سے 16روپے فی کلو اضافے کا امکان ہے،ان کے مطابق ایسوسی ایشن30 جون کو ہڑتال کرے گی، قیمت بڑھنے کی وجہ سے گھریلو سلنڈر7.58 روپے، کمرشل2675 روپے تک مہنگا ہوا ہے۔ ایسوسی ایشن کے مطابق ملک کو ایک لاکھ60ہزار ٹن ایل پی جی کی قلت کا سامنا ہے۔ ایل پی جی کے پیداواری ادارے او جی ڈی سی ایل نے قیمتیں بڑھائیں اور اگر یہ گیس درآمد نہ کی گئی تو بحران پیدا ہو گا۔ یکم جولائی سے مزید مہنگائی ہو گی، جہاں تک ایل پی جی کا تعلق ہے تو اس کی پیداوار اور کھپت کا پہلے ہی سے حساب موجود ہے اور اسی کے مطابق قلت کا بھی تخمینہ لگایا جا سکتا ہے،لیکن اب تک اس طرف توجہ نہیں دی گئی،اب جس رفتار سے یہ گیس مہنگی ہو رہی ہے اس سے ٹرانسپورٹ (رکشا+ منی ویگن وغیرہ) کے کرائے، کھانے پینے کی اشیاء اور گھریلو اخراجات بھی بڑھیں گے۔  یہ خدشہ ہے کہ مہنگائی میں کمی ہونا تو دور کی بات ہے اس میں مسلسل اضافہ ہو گا اور شہریوں کی زندگی اجیرن ہو گی،ارباب اقتدار کو اِس پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

مزید :

رائے -اداریہ -