ڈیری کی صنعت کو تباہی سے بچایا جائے: محمد خالد وسیم

  ڈیری کی صنعت کو تباہی سے بچایا جائے: محمد خالد وسیم

  

لاہور (پ ر) فیڈرل گورنمنٹ کی طرف سے موجودہ بجٹ میں ڈیری پر 17فی صد ٹیکس عائد کرنے سے یہ صنعت بند ہونے کا خدشہ ہے یہ بات پاکستان چیمبر آف ایگریکلچر اینڈ لائیو سٹاک کے چیئرمین محمد خالد وسیم نے لائیو سٹاک فارمز ویلفیئر ایسوسی ایشن کے پی کے صدر محمد آصف خان سے ملاقات میں کہی۔ اس موقع پر جنرل سیکرٹری ظہیر الحق قریشی اور ساہیوال کے صدر محمد شہباز چیمہ بھی موجود تھے۔ محمد آف خان نے بتایا کہ کے پی کے میں جانوروں میں منہ کھور کی بیماری پر حکومت کے تعاون سے قابو پا لیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ دوکانوں کے کرایوں اور جانوروں کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے دودھ کا کاروبار سے منسلک افراد کو نقصان ہو رہا ہے۔ محمد خالد وسیم نے پشاور ہائی کورٹ کی طرف سے جانوروں کی افغانستان برآمد پر پابندی کے فیصلے کو سراہتے ہوئے کا کہ اس میں عیدالاضحیٰ پر سستے جانور دستیاب ہوں گے۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ ڈیری فارمز پر استعمال ہونے والی مشینوں اور دوائیوں پر ہر قسم کا ٹیکس ختم کرے اور ڈیری فارمز کو دودھ پیک کرنے والی مشینوں کی خرید میں مدد دے تاکہ کھلا دودھ فروخت کرنے والوں کی حوصلہ شکنی ہو سکے۔ محمد خالد وسیم نے ڈیری فارمز کو جانوروں کی انشورنس کروانے کا مشورہ دیا تاکہ نقصان کی صورت میں فارمز کی مدد ہو سکے۔

مزید :

کامرس -