بجلی گھنٹوں بند، لوگوں کا پارہ ہائی، شہرشہر مظاہرے، سٹرکیں بلاک 

بجلی گھنٹوں بند، لوگوں کا پارہ ہائی، شہرشہر مظاہرے، سٹرکیں بلاک 

  

 ملتان، چوک سرور شہید، کو ٹ ادو، کوٹ چھٹہ، اڈا جھلار مدینہ، مخدوم رشید، قبصہ کالا(نیوز رپورٹر، سپیشل رپورٹر، نامہ نگار، تحصیل رپورٹر، نمائندہ پاکستان)ہول سیل میڈیسن مارکیٹ گھنٹہ گھر کی جانب سے مسلسل چار روز سے بجلی کی بندش کے خلاف گھنٹہ گھر چوک پر احتجاجی مظاہرہ دھرنا دیا ٹائر جلا کر روڈ بلاک کردیا مظاہرے کی قیادت صدر کیمسٹ ایسوسی ایشن ملتان ڈویژن اختر بٹ،جنرل سیکرٹری ہول سیل میڈیسن(بقیہ نمبر52صفحہ7پر)

 مارکیٹ گھنٹہ گھرشیخ فیصل الرحمن نے کی، مظاہرین نے بجلی کی لگاتار چار دن سے عدم فراہمی اور سب ڈویژن آفس واپڈا کے نامناسب رویہ کے خلاف نعرے بازی کی اور اپنے شدید ردعمل کا اظہار کیا  مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے محمد اختر بٹ، شیخ فیصل الرحمن نے کہا کہ گزشتہ چار روز سے میڈیسن مارکیٹ گھنٹہ گھر کی بجلی بند ہے جس کے باعث حساس ادویات اور ویکسینز شدید متاثر ہورہی ہیں جبکہ ان دنوں میں بجلی کی آنکھ مچولی سے یو پی ایس فریزر متاثر ہوے انہوں نے کہا کہ چار روز اذیت بھرے لمحات گزارے ہیں اور تاحال بارہا رابطہ کرنے کے باوجود بجلی بحال نہیں ہوئی انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب کی بڑی ہول سیل میڈیسن مارکیٹ کو بجلی کی عدم فراہمی سے جنوبی پنجاب بھر میں ادویات کی معیاری ترسیل متاثر ہونے کا خدشہ ہے علاقہ سب ڈویژن آفس بارہا رابطہ کیا ایس ڈی او اور عملہ نے مناسب جواب نہ دیا بلکہ ایس ڈی او نے بھی نامناسب رویہ اختیار کیا انہوں نے مزید کہا کہ جنوبی ہنجاب کی سب سے بڑی میڈیسن مارکیٹ کو صرف ایک ٹرانسفارمر کام کر رہا ہے جو لوڈ منیج نہیں کرسکتا انہوں نے میپکو چیف اور دیگر اعلی حکام سے مطالبہ کیا کہ ہول سیل میڈیسن مارکیٹ کی بجلی بحال کی جاے اور لوڈ منیجمنٹ بہتر کرنے کے لیے اقدامات کے جائیں بصورت دیگر واپڈا میپکو آفس کا گھیراو کریں گے مظاہرہ سے ماجد گل،مسعود قریشی،بابر شہزاد،حاجی سلیم نے بھی خطاب کیا۔ واپڈا  سب ڈویژن چوک سرور شہید میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا معاملہ طول پکڑ گیا شدید گرمی میں گھنٹوں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے شہریوں کو تڑپا کر رکھ دیا محلہ جناح کالونی میں نء ایچ ٹی لائن پر کام کرنے والے آرآرای کے اہلکار روایتی سستی کا مظاہرہ کر رہے ہیں ایل ایس آرآرای ذوالفقار پیسے بچانے کے چکر میں کم عملہ کے ساتھ کام کر رہا ہے جس کی وجہ سے نء لائن بچھانے کا کام طول پکڑ گیا ہے مذکورہ لائن سپرنٹنڈنٹ آرآرای ذوالفقار کا جب دل چاہتا ہے واپڈا سب ڈویژن سے سٹی فیڈر اور عزیز چوک فیڈر کی بجلی بند کرا دیتا ہے جس کی وجہ سے شدید گرمی اور حبس نے بچوں خواتین اور بوڑھوں کو تڑپا کر رکھ دیا ہے غیر  اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے کاروبار زندگی بھی معطل کرکے رکھ دیا ہے چوکسرورشہید کے شہریوں نے واپڈا سب ڈویژن چوک سرور شہید کی طرف سے غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے میپکو چیف ملتان سے فوری نوٹس لینے اور اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے۔ کوٹ ادو وگردونواح میں گرمی کی شدت بڑھتے ہی بجلی کی غیر اعلانیہ طویل فورس لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے، اس وقت کوٹ ادو کے دیہی وسٹی فیڈروں پر 8سے10گھنٹے کی طویل فورس لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے جسکی وجہ سے کاروبار مکمل ٹھپ ہو کر رہ گئے،جبکہ گرمی میں شدت آنے پر طویل لوڈ شیڈنگ سے شہری بے حال  ہو گئے،صارفین وشہریوں نے طویل فورس لوڈ شیڈنگ فوری ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔جون کا مہینہ شروع ہوتے ہی واپڈا حکام کی نا اہلی کے سبب بجلی خرابی کا بہانہ بنا کر لائن لاسسز پورے کرنے کیلئے کوٹ چھٹہ اور اس مضافاتی علاقوں میں گھنٹوں بجلی غائب رہنا معمول بن گی عوام شدید گرمی میں دہری اذیت میں مبتلا واپڈا حکام ستوں پی کر سو گے۔تفصیل کے مطابق کوٹ چھٹہ اور اسکے مضافاتی علاقوں میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ عذاب شہر کے مختلف علاقوں میں غیر اعلانیہ بندش جاری بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے شہریوں کو شدید گرمی میں دہری اذیت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ہر ایک گھنٹے کے بعد بجلی خرابی کا بہانہ بنا کر 4 سے 5 گھنٹے مسلسل بجلی بند رکھنا معمول بنا لیا گیا جس سے  کاروبار زندگی مفلوج ہوکر رہ گیا ہے سٹی گرڈ اسٹیشن سے منسلک شہری علاقوں میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے شہری گرمی سے بلبلا اٹھے کئی کئی گھنٹوں بجلی بند رہنے سے مسجدوں میں نمازیوں کیلئے وضو کرنے کیلئے بھی پانی دستیاب نہیں ہوتا جس سے نمازیوں کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے شہری محمد امتیاز افروز گل حسن خان غلام یسسن اقبال حسین و دیگر نے حکام بلا سے کوٹ چھٹہ میں جاری غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا نوٹس  لے کر لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ کبیروالا شہر اور نواحی علاقوں میں گزشتہ کئی رو ز سے بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈ شیڈ نگ کی جارہی ہے، کئی کئی گھنٹے بجلی کی بند ش نے نظام زند گی بری طرح مفلوج کرکے رکھ دیا ہے، بجلی کی بند ش سے چھوٹی صنعتیں بری متاثر ہورہی ہیں جس کا اثر دیہاڑی طبقہ پر ہورہا ہے، شہریوں نے بجلی کی غیر اعلانیہ بند ش پر شدیداحتجاج کرتے ہوئے غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے فوری خاتمے کامطالبہ کیا ہے۔   مخدوم رشید شہر میں مسلسل 8سے 10گھنٹے تک بجلی بند ہونے لگی، رفاقت علی، ماسٹر رب نواز، غلام محمد، محمد اسلم، ظہور احمد، شہباز شاہ، محمد محمود، حق نواز، رفیق احمد سمیت دیگر شہریوں کا کہنا ہے کہ محلہ درکھانہ، محلہ زرگراں، محلہ قصاب اور محلہ ڈھپرہ کے لئے صرف ایک ہی ٹرانسفارمر عرصہ دراز سے لگایا ہوا ہے، اس ٹرانسفارمر کو خراب ہوئے 40گھنٹوں سے زائدوقت ہو چکا ہے مگر تاحال ٹرانسفارمر نہ تو تبدیل کیا گیا ہے اور نہ ہی بجلی کا انتظام کیا گیا ہے، البتہ بڑی مشکل سے گزشتہ روز ٹرانسفارمر واپڈا عملہ نے اتارکر اپنے پاس محفوظ کر لیا ہے،ٹرانسفارمرخراب ہونے کی وجہ سے سینکڑوں کی آبادی پر محیط محلہ درکھانہ، محلہ زرگراں، محلہ قصاب اور محلہ ڈھپرہ شدید گرمی میں بغیر پانی کے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں،شہریوں نے حیرت زدہ ہوتے ہوئے بتایا کہ متعدد بار میپکو سب ڈویژن مخدوم رشید آفس میں افسران کو آگاہ کر چکے ہیں مگر کوئی ٹس سے مس نہیں ہو رہابلکہ سب ڈویژن افسران کا کہنا ہے کہ ٹرانسفارمر تبدیل کرنا ہمارا کام نہیں ہے کسی اور سے رابطہ کریں،جبکہ ان محلوں کے علاوہ مخدوم رشید شہر میں شدید گرمی کے باوجود  8سے 10گھنٹے تک مسلسل بجلی کا نہ آنا تکلیف دہ صورت حال اختیار کر چکا ہے، گرمی کی شدت ناقابلِ برداشت ہے اور واپڈا والے اپنے ضد پر اڑے ہوئے ہیں، شہریوں نے بتایا کہ گزشتہ سے پیوستہ روز 11بجے دن کو بجلی بند ہوئی اور شام 7بجے کے بعد بجلی آئی، سارا دن معصوم بچوں کے علاوہ بزرگ افراد اور مریض ذلیل و خوار ہوتے رہے ہیں، جبکہ گزشتہ روز بھی 4سے 5گھنٹے بجلی بند رہی ہے، شہریوں نے غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جب بجلی پوری نہیں کر سکتے تو ہزاروں روپے کے بل کیسے بن جاتے ہیں، محکمے والوں نے چور بازاری مچا رکھی ہے اور اعلی افسران سمیت انتظامیہ خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔بجلی کے بدترین بریک ڈان سے شہری بلبلا اٹھے، شدید گرمی کی پروا کیے بغیر مشتعل افراد سڑکوں پر نکل آئے, ہائی وے بلاک کردیا۔ میپکو نے عوام کی زندگی عذاب بنادی ہے اور وفاقی حکومت کی جانب بجلی کی فراہمی مسلسل یقینی بنانے کے احکامات کی دھجیاں اڑا دی ہے،مکینوں نے رکاوٹیں کھڑی کرکے ٹریفک معطل کردی میپکو کے خلاف سخت نعرے بازی کی جس کے باعث گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔بجلی کی بندش کے خلاف مقامی افرادنے بتایاکہ دو ہفتوں سے بجلی کی فراہمی بند کی گئی ہے جس کے باعث شدید گرمی سے گھروں, مسجدوں اور سکولوں میں زندگی اجیرن بن گئی ہے،مقامی افراد نے الزام عائدکیاکہ میپکو ملازمین بجلی کی بحالی کیلئے رشوت طلب کررہے ہیں۔دوسری جانب سب ڈویژن شاہ صدردین کی طرف اپنے مقف میں بتایا گیا کہ حالیہ طوفانی ہواں اور بارش کے باعث بجلی کے متعدد پول گرنے کے باعث بجلی کی فراہمی ایک ہفتے سے معطل ہے جن کا تاہم مرمتی کام جاری ہے۔میپکو کی کمزور تنصیبات کے باعث گرمی کی شدت اور آندھی کے بعد بارش کی آڑ میں بھی گھنٹوں بجلی غائب ہونا معمول بن کر رہ گیا ہے اور اس پر بے حسی کا یہ عالم ہے کہ میپکو ذمہ داران خود کو صارفین کا جوابدہ بھی نہیں سمجھتے معمولی سے نقص کی درستگی کے لیئے بھی صارفین کو گھنٹوں موسم کی شدت میں جھونک دیتے ہیں جبکہ منگل اور بدھ کی درمیانی شب گلگشت سب ڈویژن سے متعلقہ علاقہ سبزہ زار میں فقط ٹرانسفامر کا جمچر خراب ہونے کے باعث رات دس بجے سے بجلی کی سپلائی معطل ہونے کے بعد صبح ساڑھے آٹھ بجے بجلی بحال کی گئی رات بھر علاقہ کے مکین رات دس بجے سے گلگشت سب ڈویژن کی ہیلپ لائن پر کال کرتے رہے لیکن کسی نے توجہ نہ دی حتی کہ ایس ڈی او گلگشت سلمان سعید ملک بھی یہی کہتے رہے کہ پانچ منٹ میں عملہ پہنچ جائے گا لیکن رات تین بجے دو اہلکار آئے جن کے پاس ایک کنڈی والے ڈنڈے کے سوا کچھ نہ تھا تاہم اس بے سروسامانی سے مزین عملہ نے اپنے تئیں کوشش تو کی لیکن یہ کاروائی بھی پانچ منٹ کے لیئے ہی دیرپا ثابت ہوئی ساری رات علاقہ مکینوں نے گلیوں میں کھڑے ہوکر گزار دی لیکن سب ڈویژن سے کسی اہلکار نے دوبارہ پوچھنے کی کوشش نہیں کی۔ بجلی کی متواتر دس گھنٹوں کی بندش کے باعث جہاں نظام زندگی بری طرح متاثر ہوکر رہ گیا  وہیں میپکو نے گھریلو صارفین کو بھی تختہ مشق بنائے رکھا بجلی کی طویل بندش سے صارفین پانی جیسی بنیادی ضرورت سے بھی محروم ہوکر رہ گئے اور فریجز میں محفوظ کیا گیا کھانے پینے کے سامان کا بھی بڑی مقدار میں ضائع ہوگیا ہے میپکو حکام کی جانب سے آئے روز سیفٹی سیمینارز کی قلعی بھی میپکو اہکاروں کی رات گئے حفاظتی سامان سے بے سروسامانی نے کھول کر رکھ دی ہے گلگشت سب ڈویژن کے 70 ہزار گھریلو و کمرشل کنکشنز کے لیئے کسی بھی ایمرجنسی صورتحال میں فقط دو ملازمین پر انحصار وہ بھی حفاظتی آلات سے محروم میپکو حکام کے وژن کا آئینہ دار ہے صارفین کے مطابق گھنٹوں بجلی کے تعطل سے گھر کا پورا نظام درہم برہم ہوکر رہ جاتا ہے اور گھریلو الیکٹرونک سامان میں محفوظ کی گئی اشیا بھی قابل استعمال نہیں رہتی میپکو صارفین سے بجلی کے نرخوں سمیت درجن بھر ٹیکسز کی وصولیوں کے باوجود صارفین کو بجلی کی تسلسل کے ساتھ فراہمی میں مکمل طور پر ناکام ہے۔

بجلی بند

مزید :

ملتان صفحہ آخر -