بجٹ: 450خستہ حال سکولوں کی ازسرنو تعمیر کا فیصلہ: رقم مختص 

بجٹ: 450خستہ حال سکولوں کی ازسرنو تعمیر کا فیصلہ: رقم مختص 

  

ملتان(نیوز رپورٹر)پنجاب حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں تعلیم کے شعبے پر خصوصی توجہ دی ہے اور اس مقصد کے لیے خطیر رقوم مختص کی گئی ہیں۔ بجٹ دستاویزات کے مطابق صوبے بھر کے450خستہ حال سکولوں کی عمارات کی ازسرنو تعمیر کی جائے گی جس(بقیہ نمبر40صفحہ7پر)

 پر ایک ارب 55کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ اسی طرح 82گرلز سکولوں کی اپ گریڈیشن پر 85کروڑ60 لاکھ روپے اور 70بوائز سکولوں کی اپ گریڈیشن پر 73کروڑ50لاکھ روپے خرچ ہوں گے۔اس کے علاوہ 862سکولوں کو نئی سہولیات فراہم کی جائیں گی جس پر 79کروڑ80لاکھ روپے لاگت آئے گی۔سال 2021-22کے دوران شام کے سکولوں (انصاف آفٹر نون پروگرام) پر چھ ارب پچاس کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ اسی طرح پنجاب دانش سکول سسٹم پر ایک ارب روپے خرچ کیے جائیں گے۔صوبائی بجٹ 2021-22 میں جنوبی پنجاب کے ترقیاتی پروگرام کے لیے اربوں روپے مختص کیے گئے ہیں جس میں خواجہ فرید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی رحیم یارخان کاقیام، صادق وومن یونیورسٹی بہاولپور کی عمارت کی تعمیر، میرچاکرخان رند یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی ڈیرہ غازی خان کی عمارت کی تعمیر اور سپیشل ایجوکیشن سنٹر خانپور کی عمارت کی تعمیر شامل ہیں۔ اس کے علاوہ خانپور میں کیڈٹ کالج کے قیام اور ملتان میں شاداب انسٹی ٹیوٹ آف سپیشل ایجوکیشن اور جسمانی معذوزبچوں کے سکول میں مزید سہولیات کی فراہمی کے منصوبے شامل ہیں۔رکن صوبائی اسمبلی و ترجمان وزیر اعلی پنجاب سبین گل نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ تعلیم ہماری بنیادی ترجیحات میں شامل ہے اور وزیراعلی عثمان بزدار نے اس بجٹ میں جنوبی پنجاب کے لیے خطیر رقوم مختص کرکے دھرتی کا سپوت ہونے کا ثبوت دیا ہے۔ وہ اس خطے سے تعلق رکھتے ہیں اوریہاں کی محرومیوں اور مسائل کو بخوبی سمجھتے ہیں۔ پی پی 213کے رکن صوبائی اسمبلی بیرسٹروسیم خان بادوزئی نے بتایا کہ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ان کے حلقہ انتخاب میں بھی تعلیمی اداروں کی تعمیروترقی پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے اور اس مقصد کے لیے بجٹ میں رقوم بھی مختص کردی گئی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول جنگل خان محمد میں چاردیواری، اکیڈمک بلاک اور ٹوائلٹ کی سہولتیں فراہم کی جائیں گی۔اسی طرح اسی علاقے میں گورنمنٹ بوائز پرائمری سکول جنگل خان محمد کو پرائمری سے ایلیمنٹری کا درجہ دیاجائے گا۔ا ن دو منصوبوں پر 2کروڑ روپے کی لاگت آئے گی جبکہ حالیہ بجٹ میں اس منصوبے کیلئے 50لاکھ روپے مختص کیے گئے ہیں۔اسی طرح گورنمنٹ بوائز سکول سورج میانی میں کمرہ امتحان اورچھ کمرے تعمیر کیے جائیں گے۔دھورکوٹ گرلز سکول میں چار کمرے اوراکیڈمک بلاک تعمیر کیاجائے گا۔ان منصوبوں پر اڑھائی کروڑ روپے کی لاگت آئے گی جن میں سے 62لاکھ 50ہزارروپے اس بجٹ میں مختص کیے گئے ہیں۔

سبین گل

ملتان (سپیشل رپورٹر) آفٹر نون سکول پروگرام کیلئے اساتذہ کی تنخواہیں 15ہزار روپے مقرر کردی گئی بتایا گیا ہے کہ (بقیہ نمبر41صفحہ7پر)

حکومت پنجاب نے شرح خواندگی بڑھانے اور طلباء کی اینرولمنٹ میں اضافہ کی غرض سے شہر سمیت صوبے کے سرکاری سکولوں میں انصاف آفٹر نون سکولز لانچ کیے ہیں، ان سکولوں میں دوپہر کے اوقات میں کلاسز کو پڑھانے کے لیے اساتذہ کی تنخواہ 15 ہزار روپے مقررکئے ہیں چار اساتذہ کی تقرریوں کے اختیارات ہیڈ ماسٹرز کو تفویض کئے گئے ہیں۔ انصاف آفٹر نون سکولز میں ایلیمنٹری کلاس کو پڑھانے کیلئے اُستاد کی تنخواہ 15 ہزار جبکہ ہائی سکول میں استاد کی تنخواہ 18 ہزار روپے مقرر ہے۔ پنجاب حکومت نے شہر سمیت صوبے کے 22 اضلاع میں انصاف آفٹر نون سکولز کیلئے 577 سرکاری سکولوں کو منتخب کیا ہے۔ اس پروگرام کیلئے 12 ارب روپے کے فنڈز مختص کیے گئے ہیں۔محکمہ سکولز ایجوکیشن کے مطابق سرکاری سکولوں میں قائم کونسل کے پاس دستیاب فنڈز سے اساتذہ کو تنخواہوں کی ادائیگیاں ہوں گی۔ آفٹر نون پروگرام کے لیے ملازمین بھی تعینات ہوں گیجن کی ماہانہ تنخواہ سات ہزار روپے مقرر کی گئی ہے جبکہ ایلیمنٹری سکول میں ایک سو اور ہائی سکول میں 80 بچوں کے داخلوں کی حد مقرر ہے۔ 

پروگرام

مزید :

ملتان صفحہ آخر -