جنرل باجوہ کا ترکی، آذربائیجان کا سرکاری دورہ، سیاسی و عسکری قیادت سے تفصیلی ملاقاتیں 

      جنرل باجوہ کا ترکی، آذربائیجان کا سرکاری دورہ، سیاسی و عسکری قیادت سے ...

  

 راولپنڈی(سٹاف رپورٹر)آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے ترکی کا ایک روزہ سرکاری دورہ کیا ہے جہاں انہوں نے ترکی کے وزیر دفاع جنرل ریٹائر ہولوسکئی اکر سے ملاقات کی،ملاقات کے دوران کمانڈر ترکش جنرل سٹاف جنرل یاسر گلر اور ترک بری افواج کے کمانڈر جنرل امیت دند ر بھی موجود تھے۔آئی ایس پی آر کے مطابق ملاقات کے دوران باہمی دلچسپی کے امور،علاقائی سیکورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقع پر افغان امن عمل میں حالیہ پیشرفتوں اور مختلف شعبوں میں دو طرفہ دفاعی وسیکورٹی تعاون پر بھی بات چیت کی گئی۔آرمی چیف نے خطے میں امن و استحکام کیلئے پاکستان اور ترکی کی مشترکہ کوششوں کو سراہا۔انہوں نے اس موقف کو دہرایا کہ ترکی خطے میں اہم مسلم رکن ملک ہے اور پاکستان ترکی کے درمیان تعاون کو فروغ دینے سے علاقائی امن واستحکام پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ترک  وزیر دفاع اور عسکری قیادت نے علاقائی امن و استحکام بالخصوص افغان امن عمل میں پاکستان کے مثبت کردار کی تعریف کی اور دونوں برادر ممالک کے درمیان تعلقات کی بہتری کیلئے کام جاری رکھنے کا اعادہ کیا۔وزارت دفاع پہنچنے پر آرمی چیف کو چاق و چوبند دستے نے گارڈ آف آنر پیش کیا۔قبل ازیں جنرل قمرباجوہ آذربائیجان کا سرکاری دورہ مکمل کیا،اپنے دورے کے دو ر ا ن انہوں نے آذربائیجان کے وزیرداخلہ سمیت دیگر عسکری قیادت سے ملاقاتیں کیں۔آئی ایس پی آر کے مطابق ملاقاتوں میں باہمی دلچسپی، سکیورٹی اور دفاعی تعاون پر تبادلہ خیال کیا گیا، اس کے علاوہ علاقائی امن،تجارت اور توانائی سمیت مختلف امور پربات چیت کی گئی۔اس موقع پر آرمی چیف نے کہا موجودہ جیواسٹریٹجک حالات میں قریبی تعاون خصوصی اہمیت رکھتا ہے، مختلف درپیش چیلنجز سے نمٹنے کیلئے مشترکہ ردعمل وقت کی ضرورت ہے۔آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ملاقاتوں میں آرمی چیف نے ہر سطح،فورم پر باہمی رابطوں کو فروغ دینے کے عزم کا اعادہ کیا، آذربائیجان کی جانب سے پاک فوج کی پیشہ ورانہ مہارتوں کو سراہا گیا، اس کیساتھ ساتھ آذربائیجان کی عسکری قیادت نے افغا نستان میں دیرپا امن کیلئے کوششوں کیلئے پاکستان کی کاوشوں کا اعتراف کیا۔

جنرل باجوہ 

مزید :

صفحہ اول -