ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق پالیسی کو زیر بحث لایا جارہا ہے،اسلام زیب

ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق پالیسی کو زیر بحث لایا جارہا ہے،اسلام زیب

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کے سیکرٹری ما حولیات اسلام زیب نے کہا ہے کہ خیبرپختونخوا میں پہلی مرتبہ ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق پالیسی کو عملی طور پر نافذ کرنے کے بارے میں اقدامات کواعلی سطح پر زیر بحث لایا جا رہا ہے۔انہوں نے یہ بات ماحولیات کی تبدیلی سے متعلق ایک اعلی سطح کے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومت خیبرپختونخوا ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق اپنی پالیسی کو وقتاً فوقتاً  نظر ثانی کر کے اپ ڈیٹ کر رہی ہے سیمینار کے شرکاء نے اس بات پر زور دیا کہ حکومت ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق سماجی ذمہ داری کے بارے میں آگاہی کے لئے اقدامات کو ترجیح دے۔ماحولیاتی تبدیلی کے مسئلے کی اہمیت اور اس کے شہری زندگی، جنگلات اور جنگلی حیات پر منفی اثرات کو مد نظر رکھتے ہوئے حکومت خیبرپختونخوا نے سب نیشنل گورننس پروگرام خیبرپختونخوا کے ساتھ مل کر ایک سیمینار کا انعقاد کیا جس کا مقصد ان امور پرتبادلہ خیال کیلئے ایک پلیٹ فارم مہیا کرنا تھا۔سیمینار کا مقصد ان مسائل کو اجاگر کرنا اور انہیں قابو کرنے کیلئے مختلف تجاویز اکٹھا کرنا تھا۔ سیمینار میں خیبرپختونخوا کے مختلف اداروں کے نمائندوں، نجی اور سرکاری یونیورسٹیوں سے آئے ہوئے ماحولیات کے ماہرین  اور یونائیٹڈ نیشن ڈیولپمنٹ پروگرام کی ماحولیات سے متعلق ماہرین نے بھی شرکت کی جبکہ مختلف ماہرین نے اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے موجودہ حالات کے تناظر میں خیبرپختونخوا کی حکومت کو  ماحولیاتی تبدیلیوں کے چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے  بہت سی گرانقدر تجاویز بھی دیں۔سیمینار میں خیبرپختونخوا حکومت کی جانب سے ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق کیے گئے اقدامات اور اب تک کی کارکردگی پر بھی تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا جبکہ موجودہ حالات کے تناظر میں خیبر پختونخوا کے مختلف علاقوں بالخصوص شہری علاقوں اور پہاڑی علاقوں کو درپیش ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق چیلنجوں سے نمٹنے کے امور پر بھی بحث ہوئی اور مختلف چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے لیے گراں قدر تجاویز سامنے لائے گئی سیکرٹری ماحولیات نے شرکاء کی شکریہ ادا کرتے ہوئے ہوئے کہا کہ حکومت ان ماہرین کی رائے کو بڑی اہمیت کی نگاہ سے دیکھ رہی ہے اور اپنی پالیسیاں مرتب کرنے اور انہیں اپ ڈیٹ کرنے میں ان گرانقدر تجاویز کو نہایت اہمیت دی جائے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -