قیدیوں پر تشدد اور بھتہ مانگنے  پر سپرنٹنڈنٹ جیل طلب 

قیدیوں پر تشدد اور بھتہ مانگنے  پر سپرنٹنڈنٹ جیل طلب 

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائیکورٹ نے قیدیوں پر تشدداوران سے قلنگ(بھتہ)  مانگنے کے الزام پرسنٹرل جیل پشاور کے سپرنٹنڈنٹ کوآج عدالت طلب کرلیا ہے، چیف جسٹس قیصررشید خان اور جسٹس عتیق شاہ پرمشتمل دورکنی بنچ نے کیس پر سماعت کی، درخواست گزار قیدی عاصم خان کی جانب سے رٹ دائر کی گئی ہے جس میں موقف اپنایا گیا ہے کہ جیل افسران،اہلکار خصوصا انکے ٹاؤٹس ہوتے ہیں وہ قیدیوں سے پیسوں کا مطالبہ کرتے ہیں جسے قلنگ کا نام دیاگیا ہے۔ عدم ادائیگی پر ان پرتشدد یا پھر دوسرے جیل منتقل کیاجاتا ہے اور مختلف طریقوں سے انکو ہراساں کیاجاتا ہے۔ دوران سماعت درخواست گزارقیدی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ قیدیوں کیساتھ غیرانسانی سلوک کیاجاتا ہے اور انہیں بنیادی حقوق سے محروم رکھاجاتا ہے جو کہ کے پی پولیس ایکٹ 2017کی بھی خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے عدالت کو بتایا کہ انسداددہشتگردی عدالت نے بھی حال ہی میں قیدیوں پر تشدد کا نوٹس لیا تھالہذا ان واقعات کی جوڈیشل انکوائری ہونی چاہیے۔ تشدد کی سی سی ٹی وی فوٹیج ہونے کے باوجود قیدیوں کی شکایات کو غائب کردیاجاتاہے اور اسکی روک تھام کیلئے کوئی ایکشن نہیں لیاجاتاہے۔ دورکنی بنچ نے دلائل مکمل ہونے پر سپرنٹنڈنٹ جیل کو آج عدالت میں پیش ہونیکا حکم دے دیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -