سڑک کنارے موجود بے گھر شخص کو لڑکی ریستوران لے گئی ، کھانا کھلایا لیکن اس شخص نے چند گھنٹے بعد ہی ایسا کام کردیا کہ یقین کرنا مشکل 

سڑک کنارے موجود بے گھر شخص کو لڑکی ریستوران لے گئی ، کھانا کھلایا لیکن اس شخص ...
سڑک کنارے موجود بے گھر شخص کو لڑکی ریستوران لے گئی ، کھانا کھلایا لیکن اس شخص نے چند گھنٹے بعد ہی ایسا کام کردیا کہ یقین کرنا مشکل 

  

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا میں ایک لڑکی نے سڑک کنارے بیٹھے ایک بے گھر آدمی کو ریستوران میں لیجا کر کھانا کھلایا اور اس کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا مگر اس آدمی نے چند گھنٹے بعد ہی اس لڑکی کو بے رحمی کے ساتھ موت کے گھاٹ اتار دیا جس کی وجہ ایسی ہے کہ سن کر آپ کی حیرت کی انتہاءنہ رہے گی۔ ڈیلی سٹار کے مطابق یہ واقعہ آسٹریلوی شہرمیلبرن میں پیش آیا جہاں 25سالہ کورٹنی ہیرون نامی یہ لڑکی ملزم ہنری ہیمنڈ کو ریستوران لیجاتی ہے اور اسے کھانا کھلاتی ہے۔ ریستوران کے سی سی ٹی وی کیمرے کی فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک موقع پر کورٹنی 27سالہ ہنری کے ہاتھ تھام کر اس کے ساتھ باتیں کر رہی ہوتی ہے۔ 

ریستوران سے نکل کر دونوں میلبرن کے رائل پارک میں چلے جاتے ہیں جہاں چند گھنٹے بعد ہنری کورٹنی پر حملہ کر دیتا ہے۔ وہ ایک درخت سے لکڑی توڑ کر ڈنڈا بناتا ہے اوراس سے کورٹنی کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بناڈالتا ہے۔ وہ ڈنڈے سے کورٹنی کا سر اس قدر مسخ کر دیتا ہے کہ بعد ازاں کورٹنی کے باپ کو اس کی میت بھی نہیں دکھائی جاتی۔ پولیس نے جب ملزم کو گرفتار کرکے تفتیش کی تو اس نے کہا کہ ”مجھے ایسے لگا تھا جیسے میں کورٹنی کو اپنے پچھلے جنم سے جانتا ہوں اور پچھلے جنم میں کورٹنی نے میری بیوی کو قتل کر دیا تھا۔ اس کا بدلہ لینے کے لیے میں نے کورٹنی کو قتل کر دیا۔“ عدالتی حکم پر ملزم کا طبی معائنہ کرایا گیا تو وہ سکیزوفرینیا اور دیگر ذہنی عارضوں میں مبتلا نکلا۔تب سے ہنری ذہنی امراض کے ہسپتال ’تھامس ایمبلنگ سائیکائٹرک‘میں ہے اور اس کا علاج جاری ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -