روسی فوج کی برطانوی نیوی کے بحری جہاز پر فائرنگ، آنکھوں دیکھا حال جہاز میں سوارایک صحافی نے سنادیا

روسی فوج کی برطانوی نیوی کے بحری جہاز پر فائرنگ، آنکھوں دیکھا حال جہاز میں ...
روسی فوج کی برطانوی نیوی کے بحری جہاز پر فائرنگ، آنکھوں دیکھا حال جہاز میں سوارایک صحافی نے سنادیا

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ روز اپنی سمندری حدود کی خلاف ورزی کرنے پر روسی فوج نے برطانوی رائل نیوی کے جنگی بحری جہاز پر حملہ کر دیا تھا۔ ایک صحافی نے اس حملے کا آنکھوں دیکھا حال بیان کر دیا ہے۔ بی بی سی کا یہ رپورٹر برطانوی نیوی کے اس جہاز ایچ ایم ایس ڈیفینڈر پر موجود تھا جس پر روسی نیوی اور فضائیہ نے حملہ کیا۔ رپورٹ نے اپنے ادارے کو بھیجی گئی ای میل میں لکھا ہے کہ روسی بحریہ کی طرف سے پہلے وارننگ کے طور پر فائرنگ کی گئی اور پھر توپوں کی گھن گرج سنائی دینے لگی اور ہمارے سروں پر روسی فضائیہ کے لڑاکا طیارے گھومنے لگے۔ 

رپورٹر نے لکھا ہے کہ”ان روسی لڑاکا طیاروں نے بحری جہاز سے کچھ فاصلے پر ہی یکے بعد دیگر چار بم گرائے، جن کے دھماکوں سے فضاءگونج اٹھی۔ یہ صورتحال ایک گھنٹے تک، اس وقت تک جاری رہی جب تک برطانوی جہاز روسی بحری حدود سے باہر نہیں نکل گیا۔“ رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ گزشتہ روز کریمیا کے قریب پیش آیا جس کی وجہ سے روس اور برطانیہ کے درمیان کشیدگی عروج کو پہنچ گئی ہے۔ روس نے ماسکو میں برطانوی سفارتخانے کے دفاعی اتاشی کو طلب کرکے احتجاج ریکارڈ کرایا ہے۔ 

دوسری طرف لندن میں واقع روسی سفارتخانے نے بھی برطانوی نیوی کے اس اقدام کو اشتعال انگیز قرار دیا ہے۔ اس واقعے کے بعد ملکہ برطانیہ کی طرف سے برطانوی نیوی کے اس بحری جہاز کے لیے خصوصی پیغام بھیجا گیا ہے جس میں محفوظ سفر کی دعا اور نیک تمناﺅں کا اظہار کیا گیا ہے۔

مزید :

برطانیہ -