طریق مکہ پروگرام سعودی عرب کا عظیم تحفہ ہے،طاہر محمو د اشرفی

طریق مکہ پروگرام سعودی عرب کا عظیم تحفہ ہے،طاہر محمو د اشرفی

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) چیئرمین پاکستان علما کونسل حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہاہے کہ طریق مکہ حجاج اور زائرین کیلئے مملکت سعودی عرب کی طرف سے عظیم تحفہ ہے اور آئند ہ سالوں میں دیگر شہروں سے بھی ان شا اللہ حجاج و زائرین طریق مکہ پروگرام کے تحت حج پر جائیں گے، وزیر اعظم پاکستان کی ہدایات پر پاکستان کی وزارت مذہبی امور و حج کی جانب سے کیے جانے والے انتظامات کو بہتر سے بہتر بنایا جا رہا ہے۔یہ بات چیئرمین پاکستان علما کونسل و نمائندہ خصوصی وزیر اعظم پاکستان برائے بین المذاہب ہم آہنگی و مشرق وسطی حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے ذرائع ابلاغ سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان علما کونسل، پاکستان کی حکومت اور عوام سعودی عرب کی قیادت خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبد العزیز اور ولی عہد امیر محمد بن سلمان کے حکم پر سعودی عرب کی وزارت داخلہ کی طرف سے پاکستان کو طریق مکہ پروگرام میں شامل کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہیں۔

 اور حجاج کرام اور زائرین کیلئے روز و شب بہتر سے بہتر سہولتیں پیدا کرنے پر خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔پاکستان سعودی عرب کے تعلقات لا زوال ہیں، ہمارے تعلقات ایمان اور عقیدے کے تعلقات ہیں، طریق مکہ پروگرام اتنی بڑی سہولت ہے کہ اس کا تصور بھی آج سے چند سال پہلے نہیں کیا جا سکتاتھا اور اسی طرح یہ سمجھتے ہیں کہ سعودی عرب کی حکومت اور سعودی ولی عہد امیر محمد بن سلمان کی ویژن 2030 کے تحت جو اقدامات حجاج اور زائرین کیلئے کر رہی ہے وہ بھی بے مثال ہیں۔ پاکستان کے وزیر اعظم میاں شہباز شریف صاحب نے طریق مکہ پروگرام کے سعودی عرب کے وفد سے چند روز پہلے ملاقات کی تھی اور ان کا شکریہ بھی ادا کیا تھا۔حجاج کی خدمت ایک اعزاز ہے اور حکومت پاکستان نے جس طرح کوشش کی ہے کہ ماضی کے کرونا کے جو دو سال گذرے ہیں اس سال پوری دنیا کے اندر ریٹس بڑھے ہوئے ہیں لیکن کوشش کی ہے کہ حجاج کو زیادہ سے زیادہ سہولت دی جائے اور دعا کرتے ہیں کہ ہم سب کو اللہ تبارک و تعالی مزید توفیق دے حجاج کی خدمت کرنے کی، پاکستان کے تمام ادارے اور سعودی عرب کے تمام اداروں اور طریق مکہ پروگرام اور پاکستان میں سعودی عرب کے سفیر نواف سعید المالکی اور قونصلیٹ کا بھی شکریہ ادا کرتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ جو مملکت سعودی عرب میں پاکستانی بھائی ہیں وہ بغیر تصریح کے حج پر نہ جائیں بغیر تصریح کے حج جائز بھی نہیں ہے یہ متفقہ فتوی ہے تمام علما کرام کااور اس کے ساتھ ساتھ کسی بھی قسم کے سیاسی عمل یا سیاسی بحث و مباحثہ، نعرہ بازی یا فرقہ وارانہ نعرہ بازی میں شریک نہ ہوں۔ کیونکہ آپ عبادت کیلئے گئے ہیں عبادت کریں، اللہ سے دعا کریں، اپنے وطن کیلئے دعا کریں، مظلوم کشمیریوں، فلسطینیوں کیلئے دعا کریں، امت مسلمہ کیلئے دعا کریں، ارض حرمین شریفین اور اس کی خدمت کرنے والوں کیلئے دعا کریں، پاکستان کے استحکام، سلامتی و امن کیلئے دعا کریں۔  ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کے جو دوست ہیں وہ ہمیشہ پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیں، پاکستان کو نہ ماضی میں انہوں نے تنہا چھوڑا نہ پاکستان نے چھوڑا ہے اور نہ آئندہ چھوڑیں گے۔ 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -