رکن قومی اسمبلی کیساتھ ناروا سلوک کسی بھی صورت برداشت نہیں: ایمل ولی 

  رکن قومی اسمبلی کیساتھ ناروا سلوک کسی بھی صورت برداشت نہیں: ایمل ولی 

  

       پشاور(سٹی رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی خیبرپختونخوا کے صدر ایمل ولی خان نے رکن قومی اسمبلی علی وزیر پر مبینہ حملوں کی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انکے پروڈکشن آرڈر پر بھی عملدرآمد کیا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایک منتخب رکن قومی اسمبلی کے ساتھ ناروا سلوک کسی بھی صورت قابل برداشت نہیں، اگر سپیکر قومی اسمبلی پروڈکشن آرڈ جاری کرچکے ہیں، علی وزیر کو اسمبلی کیوں نہیں لایا جارہا؟ ریاست ماں جیسی ہوتی ہے لیکن پشتون ایم این اے کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جارہا ہے۔ ایمل ولی خان نے کہا کہ جن بیانات پر علی وزیر کو جیل میں رکھا گیا ہے، سابق وزیراعظم اور انکے حواری اس سے بھی زیادہ الزامات لگارہے ہیں۔ایک ایم این اے کیلئے ایک قانون، عمران خان کیلئے دوسرا قانون، ایک نہیں دو پاکستان کی زندہ مثال ہے۔ آج پی ٹی آئی سوشل میڈیا پر اداروں اور انکے سربراہان پر غداری تک کے الزامات لگارہے ہیں۔ انہوں نے سوال اٹھایا کہ پی ٹی آئی کے خلاف آج تک کون سی کارروائی ہوئی؟ کیا انہیں بھی علی وزیر کی طرح جیل بھیجا جائیگا؟ علی وزیر نے صرف ماورائے آئین اقدامات کی بات کی تھی، عمران خان تو آئین شکنی کی بات کررہا ہے۔کیا آئین شکن کیلئے کوئی سزا نہیں اور آئین کی پاسداری و عملداری کی بات کرنیوالے کو جیل میں رکھا جائیگا؟ انہوں نے ایک بار پھر مطالبہ دہراتے ہوئے کہا کہ اے این پی مطالبہ کرتی ہے کہ ان پر مبینہ حملوں کی تحقیقات کرائی جائے اور سچ سامنے لایاجائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -