امریکہ میں   سپریم کورٹ کے جج کو برہنہ حالت میں گاڑی چلانے پر سزا سنادی گئی

امریکہ میں   سپریم کورٹ کے جج کو برہنہ حالت میں گاڑی چلانے پر سزا سنادی گئی
امریکہ میں   سپریم کورٹ کے جج کو برہنہ حالت میں گاڑی چلانے پر سزا سنادی گئی

  

واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) امریکی ریاست اوہائیو کی سپریم کورٹ کے جج کو برہنہ حالت میں گاڑی چلانے پر تاحکمِ ثانی معطل کرتے ہوئے 14 روز کی جیل اور دو سے پانچ سال تک کے پروبیشن پیریڈ کی سزا سنادی گئی۔

ڈیلی سٹار کے مطابق 50 سالہ سکاٹ بلوویلٹ نامی  جج کو سنہ 2018 سے 2021 کے دوران پانچ بار برہنہ حالت میں گاڑی چلاتے ہوئے دیکھا گیا جن میں سے تین بار وہ گزشتہ 12 ماہ کے دوران یہ حرکت کرتے ہوئے نظر آئے۔  سنہ 2020 میں سپریم کورٹ کے مذکورہ جج کو اس کے رویے کی وجہ سے دو سالہ بحالی کے پروگرام کا حصہ بنایا گیا تھا لیکن یہ طریقہ کارگر نہیں ہوسکا۔

رواں ہفتے جج سکاٹ بلوویلٹ نے اپنے جرم کا اعتراف کیا جس کے بعد اسے 14 روزہ قید  کے ساتھ دو سے پانچ سالہ پروبیشن کی سزا سنائی گئی۔ اس کے علاوہ سکاٹ بلوویلٹ کو تاحکم ثانی سپریم کورٹ سے معطل کردیا گیا ہے۔

سپریم کورٹ آف اوہائیو کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ سکاٹ بلوویلٹ بائی پولر ڈس آرڈر کا علاج کروا رہے ہیں، انہوں نے اپنے رویے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ 

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -