وطن عزیز محفوظ ہاتھوں میں نہیں،نظریہ پاکستان کے تحفظ کیلئے قوم دشمن کے سامنے سیسہ پلائی دیوار ہے :یکجہتی کشمیر کارواں

وطن عزیز محفوظ ہاتھوں میں نہیں،نظریہ پاکستان کے تحفظ کیلئے قوم دشمن کے ...

لاہور( خصوصی رپورٹ )مذہبی، سیاسی و کشمیری جماعتوں کے قائدین نے تحریک آزادی جموں کشمیر کے نظریہ پاکستان و یکجہتی کشمیر کارواں اور کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے بھارت سے دوستی و تجارت کیلئے نظریہ پاکستان کو کمزور کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ہم نظریہ پاکستان کاتحفظ اور قوم کو دشمن کے مقابلہ کیلئے سیسہ پلائی دیوار بنائیں گے۔ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی اور نظریہ پاکستان کو کمزور کرنے کیلئے حافظ محمد سعید ودیگر رہنماؤں کو نظربند کیا گیا۔ بلوچستان میں نسلی عصبیت او ر گروہی سیاست کوپروان چڑھانے کیلئے کروڑوں ڈالر خرچ کئے جارہے ہیں۔کشمیر لہو رنگ اور سوشل میڈیا پر گستاخیاں کی جارہی ہیں‘ حکمران بے حسی اختیا رنہ کریں۔ بیرونی قوتوں کی بجائے اللہ کو راضی کرنے کی کوشش کریں۔بھارت افغانستان کی سرزمین استعمال کرکے پاکستان میں دہشت گردی کی آگ بھڑکا رہا ہے۔ حکمران بھارتی دہشت گردی کیخلاف آواز بلند کیوں نہیں کرتے۔ کشمیری تکمیل پاکستان کیلئے جانوں کے نذرانے پیش کر رہے ہیں انکی ہرممکن مددوحمایت کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔ ان خیالات کا اظہار دفاع پاکستان کونسل و جماعۃالدعوۃ کے مرکزی رہنما پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، محمد علی درانی، علامہ ابتسام الہٰی ظہیر، حافظ مدثر مصطفی، مرزا ایوب بیگ، ڈاکٹر عبدالغفور راشد، مولانا سیف اللہ خالد، سردار آفتاب احمد خاں، ابوالہاشم ربانی،ڈاکٹر سجاد حیدر، محمد شفیق قادری، مولانا طاہر طیب بھٹوی، حافظ خالد ولید، مولانا ادریس فاروقی، علی عمران شاہین، عثمان شفیق، حافظ مسعودالرحمن جانباز، عبدالستا رشاکر و دیگر نے آزادی چوک سے استنبول چوک مال روڈ تک نظریہ پاکستان و یکجہتی کشمیر کارواں اور اختتام پر منعقدہ کانفرنس کے ہزاروں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔مقررین کا مزید کہنا تھا نظریہ پاکستان پر سب سے بڑا وار نریندر مودی نے کیا ہے، اہل اقتدار بھارت سرکا رکی خوشنودی کیلئے ہولیاں منا رہے ہیں ۔ پاکستان اور ہندوستان کی تہذیب و ثقافت ایک کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ یہ نظریہ کی طاقت تھی کہ قائداعظمؒ ، علامہ اقبالؒ اور دیگر قائدین نے قیام پاکستان کیلئے سب مسلمانوں کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کیا۔ انہوں نے مسلمانوں کو ذہن دیا کہ مسلمان اور ہندو دو الگ الگ قومیں ہیں۔ انکی تہذیب و ثقافت ایک جیسی نہیں ہے‘وہ اکٹھے نہیں رہ سکتے لیکن آج نظریہ سے نابلد لوگ اس سوچ و فکر کو تبدیل کر رہے ہیں۔ آج پاکستان محفوظ ہاتھوں میں نہیں ۔ انڈیا ہمارے جوانوں کو شہید کر رہا ہے مگر حکمران اس کیخلاف بولنے کیلئے تیار نہیں ہیں ، ہم نظریہ پاکستان کا دفاع کریں گے اور اس ملک کو مستحکم کریں گے۔ حافظ محمد سعیدکو نظربند کرنیو الے حکمرانوں کو شرم آنی چاہیے، حکمران نظریہ پاکستان کی بنیادوں میں خنجر گھونپ رہے ہیں۔ حکمران بھارت و امریکہ کی غلامی سے نکلیں۔ یہ کلبھوشن جیسے حاضر سروس بھارتی جاسوس کی گرفتاری کا مسئلہ اقوام متحدہ تک نہیں لیجا سکے۔

یکجہتی کشمیر کانفرنس

مزید : علاقائی