مناواں ،50سالہ مستری تعظیم شاہ کو سگے بھائی اور بھتیجوں نے قتل کیا

مناواں ،50سالہ مستری تعظیم شاہ کو سگے بھائی اور بھتیجوں نے قتل کیا

لاہور( خبرنگار) رواں ماہ مناواں کے علاقہ میں صبح سویرے قتل ہونے والے 50 سالہ مستری تعظیم شاہ کے قتل کا معمہ حل ہو گیا۔سگے بھائی اور بھتیجوں نے اعتراف جرم کر لیا۔تفصیلات کے مطابق مناواں ٹریننگ سنٹر کے قریب واقع آبادی کارہائشی 50 سالہ تعظیم شاہ موٹر سائیکل پر جا رہا تھا کہ اسے راہ جاتے گولیاں مار دیں گئیں۔ سی آئی اے کی ٹیم نے تحقیقات کیلئے حیدر علی اور اس کے دو بیٹوں علی عباس اور علیم عباس کو حراست میں لے لیا۔حیدر علی مقتول کا چھوٹا بھائی ، علی اور علیم اس کے بھتیجے ہیں۔ تفتیش کے دوران باپ بیٹوں نے قتل کا اعتراف کیا ۔ مقتول کا بیٹا قاسم شاہ اپنے چھوٹے چچاحیدر علی کی بیٹی سے شادی کرنا چاہتا تھالیکن اس کے چچا ، چچی اورکزنوں نے اس کی مخالفت کی۔ اس دوران حیدر علی کی بیٹی گھر میں پراسرار طور پر ہلاک ہو گئی جس پر مقتول تعظیم شاہ اور اس کے بھائی حیدر علی کے درمیان تنازع نے جنم لیا۔ سی آئی اے کے مطابق اب تک سامنے آنے والی تفتیش میں ثابت ہوا ہے کہ تعظیم شاہ کو رشتہ داری کے تنازع پر قتل کیا گیا ہے ۔اس بات کی تفتیش کی جا رہی ہے کہ وقوعہ کے وقت مرکزی ملزم کے ساتھ اس کے دونوں بیٹے علیم اور علی بھی تھے یا پھر ملزم کے ساتھ اس کا ایک ہی بیٹا علیم تھا۔اصل حقائق سامنے آ جائیں گے۔مقتول کے بیٹے قاسم شاہ نے ’’پاکستان‘‘ کو بتایا کہ اسکے والد کو اس کے چچا اور اس کے دونوں کزنوں نے قتل کیا ہے۔ تفتیشی افسر اصل حقائق سامنے نہیں لا رہا ہے۔ سی سی پی او لاہور انصاف دلوائیں۔

مزید : علاقائی