ہری شہری کو صاف پانی کی فراہمی حکومت کی فرائض میں سر فہر ست ہے : محمد عاطف

ہری شہری کو صاف پانی کی فراہمی حکومت کی فرائض میں سر فہر ست ہے : محمد عاطف

 پشاور( سٹاف رپورٹر )صوبائی وزیر تعلیم محمد عاطف خان نے کہا ہے کہ اداروں کو خودمختار بناکر ان کو ضروری وسائل فراہم کرکے ہی ان کی کارکردگی بہتر بنائی جاسکتی ہے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت اس سوچ کو لے کر آگے بڑھ رہی ہے بد قسمتی یہ ہے کہ ہر شخص تبدیلی تو چاہتا ہے مگر خود کو بدلنے کے لیے کو ئی تیار نہیں ۔تبدیلی کے لیے ہمیں اس روش کو تبدیل کرنا ہوگا ۔صاف پانی ہر شہری کا بنیادی حق ہے اور حکومت اس حوالے سے اپنے فرائض سے غافل نہیں ۔بڑے شہروں میں واٹر سپلائی اور سینی ٹیشن کمپنیاں قائم کر کے ان کو وسائل بھی دے دیئے گئے ہیں جس سے یقینی طور پر صاف پانی کی فراہمی میں پیش رفت ہوئی ہے ۔وہ پانی کے عالمی دن کے موقع پر واٹر سپلائی اینڈ سینی ٹیشن کمپنی مردان( ڈبلیو ایس ایس سی مردان) کے زیر اہتمام سیمینار سے خطاب کررہے ہیں ۔جس سے تحصیل ناظم مردان ایوب خان ، نائب تحصیل ناظم مشتاق سیماب اور کمپنی کے چیف ناصر غفور نے بھی خطاب کیا ۔اس موقع پر کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹر کے رکن سمیع اللہ خان ، ڈسٹرکٹ اور تحصیل کونسل کے ممبران مختلف ویلیج کونسلوں کے ناظمین و ارکان اور سماجی تنظیموں اور کمیونٹی کے نمائندے بھی موجود تھے ۔محمد عاطف خان نے کہا کہ ماضی کی حکومتوں نے اداروں کے استحکام کی بجائے ذاتی مفادات کے لیے ا فراد پر انحصار کیا جس سے نظام کا بیڑا غرق ہوا ۔ٹی ایم ایز اور ڈیویلپمنٹ اتھارٹیز کے ملازمین افسر شاہی اور خان خوانین کے ذاتی حجروں اور گھروں میں کام کرتے رہے اور کسی حکومت میں ان کو کام پر لانے کی ہمت نہیں تھی تاہم ہماری حکومت نے اس روش کو بدلنے کا فیصلہ کیا اور جب میں بحیثیت وزیر اپنے حجرے میں سرکاری ملازم کو ذاتی کام کے لیے نہیں رکھوں گا تو کسی اور کو بھی کسی صورت میں قوم کے پیسے سے عیاشی نہیں کرنے دوں گا کو ئی بڑا افسراور خان ہے تو اپنے خرچے پر ملازم رکھے ،ہماری اسی پالیسی کی بدولت مردان میں صفائی کی صورتحال بہتر ہورہی ہے اور ڈبلیو ایس ایس سی ایم اس سلسلے میں پیش رفت کررہی ہے کمپنی کو اختیارات کے ساتھ وسائل بھی دیئے گئے ہیں اور اس کے خودمختار بورڈ میں سرکاری حکام کے ساتھ عام لوگوں کو بھی نمائندگی دی گئی ہے ۔محمد عاطف خان نے کہا کہ پانی اور صحت کا چولی دامن کا ساتھ ہے صاف پانی کی فراہمی سے صحت پر لگنے والی کثیر رقوم کی بچت کی جاسکتی ہے ۔علاج کی بہتر سہولیات کے لیے مردان میڈیکل کمپلکس کو 41 کروڑ روپے کے فنڈز فراہم کردیئے گئے ہیں جبکہ جون سے پہلے مزید 42 کروڑ روپے فراہم کردئے جائیں گے ۔خواتین یونیورسٹی میں کلاسز شروع ہوگئی ہیں اور اگلے ہفتے مردان میں ایک مکمل انجنئیرنگ یونیورسٹی کی بھی باقاعدہ منظوری دیدی جائے گی ۔ایک ارب روپے سے مردان کی خوبصورتی اور ترقی کے ساتھ ساتھ ایک ارب 72 کروڑ روپے سے تین فلائی اوورز کی تعمیر کاکام بھی اگلے چند ہفتے میں شروع ہوجائے گا ۔اُنہوں نے کہا کہ پانی قدر ت کا بیش قیمت تحفہ ہے اور ہمیں اپنی آئندہ نسلوں کے لیے اس کا ضیاع روکنا ہوگا ۔اس موقع پر اُنہوں نے مختلف ویلج کونسلوں میں صفائی کے بہتر نتظامات پر ناظمین کو شیلڈز بھی دیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر