بھارتیہ جنتا پارٹی نے گائے ذبح کرنے پر موت کی سزا کا بل راجیہ سبھا میں پیش کر دیا

بھارتیہ جنتا پارٹی نے گائے ذبح کرنے پر موت کی سزا کا بل راجیہ سبھا میں پیش کر ...
بھارتیہ جنتا پارٹی نے گائے ذبح کرنے پر موت کی سزا کا بل راجیہ سبھا میں پیش کر دیا

  


نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی وزیر اعظم نریندرا مودی کی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی نے ہندوستان میں گائے ذبح کرنے پر موت کی سزا کاقانون بنانے کے لئے’گاؤ تحفظ بل 2017‘‘ راجیا سبھا میں پیش کر دیا ،بھارتیہ جنتا پارٹی کے سبرامنیم سوامی نے ایوان میں’’ گاؤ تحفظ بل 2017 ء‘‘پیش کیا۔

مزیدپڑھیں:یہ شخص کسی بھی جہاز میں سوار ہوا تو کوئی پائلٹ طیارہ نہیں اڑائے گا ،رکن پارلیمنٹ کی ایسی حرکت کہ ملک بھر کی فضائی کمپنیوں نے’’ایکا ‘‘ کرتے ہوئے بڑا اعلان کر دیا

بھارتی نجی چینل ’’زی نیوز ‘‘ کے مطابق ہندوستان کی حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما سبرامنیم سوامی نے راجیا سبھا میں ’’گاؤ تحفظ بل2017ء ‘‘ پیش کر دیا ، اس بل میں گائے کی نسل کو استحکام بخشنے اورگائے ذبح کرنے پر پابندی لگانے کے لئے آئین کے آرٹیکل 37 اور 48 پر عمل کرنے کے لئے ایک اتھارٹی کا قیام اور گائے ذبح کرنے پر موت کی سزا کا قانون تجویز کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ بھارت کی کئی ریاستوں میں گائے ذبح کرنے پر پہلے سے ہی پابندی عائد ہے جبکہ ہندوستانی ریاست اتر پردیش کے نومنتخب وزیر اعلیٰ اور انتہا پسند ہند ورہنما ء آدتیہ ناتھ یوگی نے بھی تین روز قبل ریاست میں تمام مذبح خانے بند کرنے کا حکم جاری کیا تھا ۔

مزید : بین الاقوامی