بورڈ لیکویڈیشن عملہ کا اوورسیز پاکستانی کی ملکیتی زمین پر قبضہ

بورڈ لیکویڈیشن عملہ کا اوورسیز پاکستانی کی ملکیتی زمین پر قبضہ

  



لاہور(سٹی رپورٹر)محکمہ پنجاب کوآپریٹو بورڈ لیکویڈیشن کے عملہ کا اوررسیز پاکستانی کی ملکیتی زمین پر چھٹی کے روز دھاوا بول کر قبضہ، گھروں کی دیواریں گرا کر کرائے داروں کا سامان اٹھالیا، متاثرہ شخص نے اندراج مقدمہ کے لیے تھانہ فیکٹری ایریا میں درخواست دے دی۔ تفصیلات کے مطابق اورسیز پاکستانی محمد ندیم کا کہنا ہے کہ اس نے 1992 میں چونگی امرسدھو کے علاقے میں واقع محمد علی کالونی میں 13کنال 17 مرلے اراضی خریدی تھی جس کی رجسٹری اور انتقال اس کے نام ہے جبکہ اس قطعہ اراضی سے ملحقہ مذکورہ بورڈ کی بھی زمین تھی جس پر بورڈ کے ملازمین نے ملی بھگت کر کے قبضے کروا دیے ہیں اب بورڈ کے سیکرٹری نوراعوان کے دباؤ پر اس کی ملکیتی زمین کو بورڈ کی زمین ظاہر کرکے بغیر کسی قانونی جواز اور حکم کے اس زمین پر قبضہ کرنے کے لیے دھاوا بول دیا گھروں کی دیواریں گرا دیں اور کرایہ داروں کا سامان اٹھا کر لے گئے جس کی ویڈیو اور تصاویر مالک نے بنا لیں اور 15 پر کال کرنے پر آنے والی پولیس کو بھی فراہم کر دیں۔ محمد ندیم کا کہنا ہے کہ سیکرٹری لیکویڈیشن بورڈ کے دباو پر درخواست دینے کے باوجود تھانہ فیکٹری ایریا کی پولیس بورڈ کے عملہ کے غیر قانونی اقدام کے خلاف مقدمہ درج نہیں کر رہی جبکہ ایس ایچ او تھانہ فیکٹری ایریا کا کہنا ہے کہ اس زمین کے حوالے سے معاملہ عدالت میں جس میں پولیس مداخلت نہیں کر سکتی محمد ندیم کی درخواست پر کارروائی میرٹ پر کی جائے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1