ملک کو چیلنج درپیش، کرونا وائرس کے معاملے پر سیاسی دکان چمکانا ٹھیک نہیں: فردوس عاشق

ملک کو چیلنج درپیش، کرونا وائرس کے معاملے پر سیاسی دکان چمکانا ٹھیک نہیں: ...

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) وزیراعظم کی معاون خصوصی اطلاعات ونشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ کرونا کیخلاف جنگ میں سب سے ہم دستہ عوام ہیں، اس چیلنج کو شکست دینے کیلئے قومی یکجہتی ضروری ہے، کرونا کے معاملے پر سیاسی دکان چمکانا ٹھیک نہیں، کچھ لوگ خود کو قرنطینہ میں رکھ کر ملک سے باہر چلے گئے تھے، عوام کو لاک اپ میں رکھ کرخود لاک اپ سے باہر آنا چاہتے ہیں۔ اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان کو کرونا کی شکل میں چیلنج درپیش ہے، اس وباء کے باعث پوری قوم مسائل کا شکار ہے، لاک ڈاؤن کے حوالے سے مختلف آراء دی جا رہی ہیں، اکثریت کی رائے تھی کہ پاکستان کولاک ڈاؤن کی طرف جانا چاہیے مگر اس کا مطلب اپنے احکامات پر زبردستی سکیورٹی فورسزکے ذریعے عمل کرایا جائے، حکومت ڈنڈے کے زور پر ان چیلنجز کا مقابلہ نہیں کر سکتی۔انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 245 کے تحت صوبوں کو فوج طلب کرنے کا اختیار دیا گیا ہے، صوبوں کے اختیارمیں ہے جب چاہیں فوج طلب کر سکتے ہیں، وزیراعظم سمری کی منظوری دے چکے ہیں، جزوی لاک ڈاؤن کا فیصلہ صوبائی حکومت پر منحصر ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے 8 ایئرپورٹس پرسول آرمڈ فورسز تعینات ہیں۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ شہباز شریف نقب زنی کر کے ذاتی مقاصد حاصل کرنا چاہتے ہیں،کرونا جیسے قومی ایشو پر سیاست کرنا مناسب طرز عمل نہیں ہے،مشکل وقت میں عوام کو تنہا نہیں چھوڑیں گے، ضرورت پڑنے پر صوبائی حکومتیں آرٹیکل 245کے تحت فوج کی مدد حاصل کر سکتی ہیں،جزوی لاک ڈاو ن کا آپشن صوبوں پر چھوڑ دیا۔انہوں نے کہا کہ کرونا کی وباسے لڑنے کیلئے بھی 23مارچ والے جذبے کی ضرورت ہے،عوام کا تحفظ،صحت اور سلامتی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

فردوس عاشق اعوان

مزید : صفحہ اول