کرونا وائرس، ڈبلیو ایس ایس پی کی جراثیم کش سپرے مہم جاری

کرونا وائرس، ڈبلیو ایس ایس پی کی جراثیم کش سپرے مہم جاری

  



پشاور (بیورورپورٹ) کورونا وائرس کا ممکنہ پھیلاؤ روکنے اور لوگوں کے بچاؤ کے لئے واٹر اینڈ سینی ٹیشن سروسز پشاور (ڈبلیو ایس ایس پی) کی کلورین سلوشن اور جراثیم کش سپرے مہم کے دوسرے روز خدمات انجام دینے والے دفاتر، مشتبہ کیس والے علاقوں اور دوران پور قرنطینہ سمیت شہر کے مختلف علاقوں میں سڑکوں کی کلورین سلوشن سے دھلائی اور جراثیم کش سپرے کیا گیا، ایس ایس پی آپریشنز ظہور آفریدی کی درخواست پر سی سی پی او دفاتراور پولیس لائنز میں بھی کلورین سلوشن دھلائی اور جراثیم کش سپرے کیا گیا۔ ڈبلیو ایس ایس پی نے راہ گزرتے افراد کے بچاؤ کے لئے سینیٹائزراور ہاتھ دھونے کا بندوبست کرتے ہوئے مختلف علاقوں میں نلکے لگا دیئے ہیں، عوامی آگاہی کے لئے پوسٹرز کی تقسیم بھی شروع کر دی ہے۔ سڑکوں کی کلورین سلوشن سے دھلائی کرنے والی گاڑیوں میں پریشر واشرز کی تنصیب کا آغاز کر دیا گیا ہے جس سے کم وقت میں زیادہ علاقے کی دھلائی کی جاتی ہے۔ چیف ایگزیکٹو آفیسر سید ظفر علی شاہ نے عوام سے اپیل کی ہے کہ اپنے اور دوسروں کے تحفظ کے لئے گھروں پر رہیں غیر ضروری مجمع میں جانے اور گھروں سے نکلنے سے گریز کریں، عملہ چوکس ہے وائرس کے خاتمے کے لئے دن رات کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام علاقوں پر توجہ مرکوز ہے خصوصاً جہاں سے مشتبہ کیس سامنے آئے ہیں وہاں اضافی سپرے کا بندوبست کیا گیا ہے، مہم میں مصروف عملے کے تحفظ کے لئے بھی اقدامات اٹھائے ہیں مزید عملے کی تربیت جاری ہے، عملے کو ہاتھ دھونے کے لئے سینیٹائزر فراہم کیا ہے جبکہ معمول کی خدمات اور کورونا وائرس خاتمہ مہم میں حصہ لینے والی گاڑیوں کی بھی تسلسل کے ساتھ دھلائی اور جراثیم کشی کی جارہی ہے۔ ادھر جنرل منیجر آپریشنز ریاض احمد خان کا کہنا ہے کہ شہریوں اور عملے کے بچاؤ کے لئے ہرممکن کوشش کر رہے ہیں حکومتی احکامات پر من وعن عملدرآمد کیا جارہا ہے شہر کو جراثیم پاک کرنے کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھا رہے ہیں شہری رضا کارانہ طور گھروں پر رہ کر عملے کا کام آسان اور اپنا تحفظ یقینی بنا سکتے ہیں۔دریں اثناء ڈبلیو ایس ایس پی بورڈ آف ڈائریکٹرز کے رکن خورشید خان نے کورونا وائرس سے نپٹنے کے لئے اٹھائے گئے اقدامات پر ڈبلیو ایس ایس پی اور عملے کو خراج تحسین پیش کیا ہے انہوں نے عملے میں سینیٹائزر اور عوامی آگاہی کے لئے پوسٹرز بھی تقسیم کئے

مزید : پشاورصفحہ آخر