پنجاب اور بلوچستان میں 14روز کیلئے لاک ڈاﺅن کاآغاز ہو گیا

پنجاب اور بلوچستان میں 14روز کیلئے لاک ڈاﺅن کاآغاز ہو گیا
پنجاب اور بلوچستان میں 14روز کیلئے لاک ڈاﺅن کاآغاز ہو گیا

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب اور بلوچستان میں 14 روز کیلئے لاک ڈاﺅن کا آغاز ہو گیا،نجی ،سرکاری ادارے اور پبلک ٹرانسپورٹ بند رہے گی ،کریانہ ،گوشت اور سبزی کی دکانیں اورپٹرول پمپ کھلے رہیں گے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پنجاب اوربلوچستان میں بھی کورونا وائرس کی بڑھتی ہوئی ہلاکت خیزی سے بچاؤ اورعالمی وبا کو مزید پھیلنے سے روکنے کےلئے لاک ڈاؤن کا اعلان کردیا گیا ہے۔ صوبے میں فوج کی تعیناتی کی بھی منظوری دے دی گئی ہے۔

محکمہ داخلہ پنجاب اور بلوچستان کی جانب سے لاک ڈاؤن کے نفاذ کا اعلان کیا گیا ہے جس کا اطلاق آج سے ہوگا اور آئندہ14 روز تک جاری رہے گا۔پنجاب اور بلوچستان کے محکمہ داخلہ کے جاری کردہ حکمنامے کے تحت لاک ڈاؤن کے دوران تمام سرکاری و نجی دفاتر بند رہیں گے البتہ ضروری سروسز کے حامل افراد اس پابندی سے مستثنیٰ ہوں گے۔

صوبائی محکمہ داخلہ کے مطابق شعبہ صحت میں کام کرنے والے افراد پر پابندی کا اطلاق نہیں ہوگا۔اسی طرح لیبارٹریز کے ملازمین اور سکیورٹی اہل کاروں کو بھی پابندی سے استثنیٰ دیا گیا ہے۔صوبائی محکمہ داخلہ نے حکمنامے میں کہا ہے کہ نماز جنازہ میں شریک افراد ایک دوسرے سے ایک میٹر کے فاصلے پر ہوں گے۔

بلوچستان حکومت نے لاک ڈاؤن کے دوران اجازت دی ہے کہ ایک خاندان کا صرف ایک شخص سودا سلف لینے گھر سے باہر جا سکے گا لیکن گھر سے نکلنے والے کے لیے لازمی ہو گا کہ وہ اپنا شناختی کارڈ اور اتھارٹی لیٹر ساتھ رکھے۔بلوچستان حکومت کے محکمہ داخلہ نے تمام بڑے سٹورز مالکان اور انتظامیہ کو پابند کیا ہے کہ وہ صرف روز مرہ کی ضروریات کے سیکشنز کو کھلا رکھیں گے۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور