’کورونا ٹی 20 میچ نہیں ہوسکتا ہے یہ صورتحال 6 مہینے تک چلے‘ وزیر اعظم نے واضح کردیا

’کورونا ٹی 20 میچ نہیں ہوسکتا ہے یہ صورتحال 6 مہینے تک چلے‘ وزیر اعظم نے واضح ...
’کورونا ٹی 20 میچ نہیں ہوسکتا ہے یہ صورتحال 6 مہینے تک چلے‘ وزیر اعظم نے واضح کردیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کار ارشاد بھٹی کے سوال کے جواب میں وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کورونا وائرس ٹی 20 میچ نہیں ہے ہوسکتا ہے کہ یہ صورتحال 6 مہینے تک چلے، وقت بتائے گا کہ ہم نے کیا فیصلے کرنے ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان کی سینئر صحافیوں ، اینکر سنز اور تجزیہ کاروں سے ملاقات کے دوران تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے سوال کیا کہ ہم بھی آپ کے ساتھ اسی کورونا کیلئے لڑ رہے ہیں ، یہ ہم سب کا ملک ہے، لیکن صوبے اور وزیر اعظم علیحدہ علیحدہ چل رہے ہیں، سارے ڈاکٹر اور نرسیں روہی ہیں کہ ان کے پاس سہولیات نہیں ہیں، مرکز پاکستان کو لیڈ کرتا ہوا نظر نہیں آرہا۔

ارشاد بھٹی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ کورونا وائرس ٹی 20 میچ نہیں ہے ہوسکتا ہے کہ یہ 6 مہینے تک چلے ، ہم وقت کو دیکھ کر فیصلے کر رہے ہیں، دعاہے کہ ہم کورونا وائرس کا پھیلاﺅ روک لیں اور اس کو کم کرسکیں۔

انہوں نے کہا کہ جتنی تیزی سے ہم نے کورونا پر کام کیا ہے اتنا کسی ملک نے نہیں کیا، پہلے کیس سے اب تک مسلسل فالو کر رہے ہیں، مکمل لاک ڈاﺅن کا مطلب کرفیو ہے، لاک ڈاﺅن تو اسی وقت شروع ہوگیا تھا جب ہم نے سکول بند کیے، 18 ویں ترمیم کے بعد صوبے اپنے فیصلے خود کرتے ہیں اور وفاق انہیں صرف رہنمائی دے سکتا ہے، اگر آج ہم کرفیو لگادیتے ہیں تو 2 ہفتے بعد کی صورتحال کیا ہوگی، اگر ہم لوگوں کو پکڑ کر جیلوں میں ڈال دیں تو جیلوں میں بھی کورونا پھیل سکتا ہے۔

وزیر اعظم کاکہنا تھا کہ ٹرانسپورٹ بند کرنے کا قدم ہم سب سے آخر میں اٹھا رہے ہیں ، اگر ٹرانسپورٹ بند کردی تو سپلائی رک جائے گی پھر ہسپتالوں میں سامان بھی نہیں پہنچ سکے۔ آج ہم نے جو اقدامات اٹھائے ہیں ان پر ایک ہفتے کے بعد نظر ثانی کریں گے، ہم قدم اٹھاتو لیں لیکن ایک ہفتے بعد اس کے اثرات کیا ہوں گے، ہم مسلسل صوبوں سے خبریں لے رہے ہیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ کورونا وائرس ٹی 20 میچ نہیں ہے ہوسکتا ہے کہ یہ 6 مہینے تک چلے ، اس لیے وقت بتائے گا کہ ہم نے کیا اقدامات اٹھانے ہیں، اللہ سے دعا کرتے ہیں کہ اس کا پھیلاﺅ روک دیں اور اسے کم کردیں، کورونا وائرس باقی ملکوں کی نسبت ہمارے ہاں بہت آہستہ جارہا ہے۔

مزید : قومی /کورونا وائرس