’کورونا وائرس ایک مرتبہ پھر چین پر حملہ کر سکتا ہے‘ بیجنگ کی معروف ڈاکٹر نے اب تک کی سب سے خطرناک وارننگ دے دی

’کورونا وائرس ایک مرتبہ پھر چین پر حملہ کر سکتا ہے‘ بیجنگ کی معروف ڈاکٹر نے ...
’کورونا وائرس ایک مرتبہ پھر چین پر حملہ کر سکتا ہے‘ بیجنگ کی معروف ڈاکٹر نے اب تک کی سب سے خطرناک وارننگ دے دی

  



بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چین نے جس بے مثال طریقے سے کورونا وائرس پر قابو پایا، دنیا اس کی تعریف کر رہی ہے لیکن اب بیجنگ کی ایک معروف خاتون ڈاکٹر نے چین میں دوبارہ وائرس پھیلنے کی وارننگ جاری کر دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق چین میں مقامی سطح پر کورونا وائرس کے نئے مریض سامنے آنے کی شرح لگ بھگ صفر ہو چکی ہے تاہم بیرون ممالک سے متاثرہ لوگ چین آ رہے ہیں جن سے مقامی لوگوں کو بھی خطرہ لاحق ہے۔

گزشتہ روز ایسے ہی ایک بیرون ملک سے آنے والے متاثرہ شخص کی وجہ سے گوانگ ژومیں ایک مقامی شخص بھی وائرس کا شکار ہو گیا۔ یہ متاثرہ شخص ترکی سے آیا تھا۔ اس معاملے پر پروفیسر ڈاکٹر لی لین جوآن نے چینی حکومت اور چینی عوام کو وارننگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں بیرون ممالک سے آنے والے لوگوں سے متنبہ رہنا ہو گا اور ملک کے داخلی راستوں اور ایئرپورٹس پر سکریننگ کا نظام مزید مو¿ثر کرنا ہوگا ورنہ کورونا وائرس کی وباءدوبارہ چین میں پھیل سکتی ہے۔ گوانگ ژو میں یہ نیا کیس ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب ووہان اور دیگر انتہائی متاثرہونے والے شہروں میں 2ماہ کے لاک ڈاﺅن کے بعد زندگی آہستہ آہستہ واپس لوٹ رہی ہے۔ 73سالہ پروفیسر لی کا کہنا تھا کہ اگر چین میں لاک ڈاﺅن ختم ہو گیا اور زندگی معمول پر آ گئی لیکن بیرون ملک سے کورونا وائرس کی آمد نہ رکی تو چین میں ایک بار پھر وباءپھیل جائے گی اور ہمیں پھر سے اسی تکلیف سے گزرنا پڑے گا جس سے پہلے گزرے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی