ایبٹ آبادآپریشن غیرقانونی قرار، کراچی میں دوہزار افراد قتل، صرف 220لاپتہ افراد مل سکے: ایمنسٹی انٹرنیشنل

ایبٹ آبادآپریشن غیرقانونی قرار، کراچی میں دوہزار افراد قتل، صرف 220لاپتہ ...
ایبٹ آبادآپریشن غیرقانونی قرار، کراچی میں دوہزار افراد قتل، صرف 220لاپتہ افراد مل سکے: ایمنسٹی انٹرنیشنل

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے اپنی سالانہ رپورٹ میں ایبٹ آباد آپریشن کو غیر قانونی قراردیتے ہوئے لاپتہ افراد کے معاملے اور اقلیتوں سے زیادتیوں پر تشویش کااظہارکیاہے۔رپورٹ کے مطابق گذشتہ سال پاکستان میں گیارہ صحافی مارے گئے ،کراچی میں دوہزار شہری موت کے منہ میں دھکیلے گئے جبکہ سینکڑوں لاپتہ افراد میں سے صرف 220کا سراغ لگایاجاسکا۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے سال2011ءکی جاری کردہ رپورٹ میں کہاہے کہ بلوچستان میں انصاف نہ کیا گیا تو حالات مزید خراب ہوں گے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل کے سیکرٹری جنرل سلیل شیٹی نے کہا کہ بلوچستان، خیبرپختونخوا ہ اور قبائلی علاقوں میں انسانی حقوق مکمل طور پر معطل ہیں، اُن علاقوں میں انصاف اور احتساب کی شدید ضرورت ہے، اگر انصاف نہ ملا تو حالات بد سے بدتر ہوتے چلے جائیں گے۔رپورٹ کے مطابق مارچ دو ہزار دس تک سینکڑوں لاپتہ افراد میں سے دو سو بیس کو پیش کیاجاسکا۔ پاکستان میں گزشتہ سال نو صحافی قتل کیے گئے، خیبرپختونخوا ہ میں دو سو چھیالیس سکول تباہ کیے گئے۔ کراچی میں طالبان سمیت سیاسی جماعتوں کے مسلح گروپ لوگوں کے قتل عام میں ملوث ہیں اور گذشتہ سال دو ہزار افراد قتل اور کئی سو زخمی کئے گئے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دو ہزار گیارہ میں پندرہ سو سے زائد خواتین کو مختلف وجوہات پر قتل کیا گیا جن میں سے پانچ سو سے زائد خواتین غیرت کے نام پر قتل کی گئیں۔پاکستان میں اُسامہ بن لادن کو مارنے کے لیے امریکہ کی طرف سے کیے گئے آپریشن پر شدید تنقید کرتے ہوئے اُسے غیر قانونی قراردیاگیا۔شام سے متعلق ایمنسٹی انٹرنیشنل کی رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ عالمی طاقتیں شام میں پرتشدد واقعات روکنے میں ناکام ہوگئی ہیں۔ روس شام کو اسلحہ فراہم کرتا ہے اور چین پابندیوں کے خلاف ڈھال بنا ہوا ہے جبکہ مجموعی طور پرسال دو ہزار گیارہ کے دوران عام آدمی انصاف اور عزت کا مطالبہ کرتا رہا۔

مزید : سیاست /اہم خبریں