5250 روپے میں زندگی کیسے گزاری جاسکتی ہے: سپریم کورٹ

5250 روپے میں زندگی کیسے گزاری جاسکتی ہے: سپریم کورٹ
5250 روپے میں زندگی کیسے گزاری جاسکتی ہے: سپریم کورٹ

  

اسلام آباد (آن لائن) سپریم کورٹ نے ای او بی آئی پنشنرز سے متعلق کیس میں چیئرمین ای او بی آئی کو15دنوں میں مفصل رپورٹ جمع کروانے اورر اٹارنی جنرل سمیت چاروں صوبوں کے ایڈووکیٹ جنرلز کو نوٹس جاری کرتے ہوئے مقدمہ کی سماعت 7جون تک ملتوی کردی ، جبکہ دوران سماعت جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے ہیں کہ،عوام کو انکے بنیادی حقوق دینا ریاست کی ذمہ داری ہے ، پنشن کا ایسا طریقہ کار ہونا چاہیے جس سے مسئلے کا مستقل حل ممکن ہو سکے ، پنشن ملازمین کا حق ہے یہ کسی سے خیرات نہیں مانگ رہے ،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ 5250روپے پنشن مل رہی ہے ،جبکہ حکومتی اعلان کے بعد کم از کم 7000روپے ملنی چاہیے ہمارے فنڈز میں خردبرد کیا گیا ہم غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزار رہے ہیں، اس پر جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ پنشن آپ کا حق ہے آپ خیرات نہیں مانگ رہے ،ان لوگوں نے زندگی کا ایک حصہ ملک کو اور ادارے کودیاہے، ادارے کا فرض ہے کہ بڑھاپے میں سابقہ ملازمین کی مدد کرے۔

مزید :

اسلام آباد -