سعودی عرب میں کفیل نے 5 غیر ملکی ملازمین کو زندہ دفن کردیا کیونکہ۔۔۔

سعودی عرب میں کفیل نے 5 غیر ملکی ملازمین کو زندہ دفن کردیا کیونکہ۔۔۔
سعودی عرب میں کفیل نے 5 غیر ملکی ملازمین کو زندہ دفن کردیا کیونکہ۔۔۔

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) عرب ممالک میں غیر ملکیوں کے ساتھ کفیلوں کا ناروا سلوک کوئی نئی بات نہیں لیکن ایسا بھیانک واقعہ شاید ہی کبھی سننے میں آیا ہو کہ کفیل نے اپنے غصے کی آگ ٹھنڈی کرنے کے لئے اکٹھے پانچ غیر ملکی ملازمین کو زندہ دفن کر دیا ہو۔ عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق اس سفاکانہ جرم کے لئے مجرم قرار پانے والے افراد میں سے ایک نے رونگٹے کھڑے کردینے والے جرم کا احوال کچھ یوں بیان کیا:

”ہم شراب لیکر فارم پر پہنچے تو ایک کمرے میں 5غیر ملکی ملازمین کو بندھے ہوئے پایا۔ ان کے ہاتھ پاؤں بندھے تھے اور وہ بیہوش پڑے تھے۔ جب ہم نے اپنے میزبان سے پوچھا کہ یہ کیا ماجرا ہے تو اس نے بتایا کہ ان میں سے ایک نے اپنے کفیل کی بیٹی اور دیگر خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کیا تھا۔ پھر ہم انہیں وہیں چھوڑ کر دوسرے کمرے میں شراب نوشی کے لئے چلے گئے۔ جب ہم شراب پی رہے تھے تو ان میں سے ایک کے کراہنے اور چلانے کی آوازیں آئیں۔ میں اٹھ کر گیا اور اس کے منہ پر تھپڑ مارا۔ اس کے بعد میرے ساتھ آنے والا دوسرا دوست گیا اور لاٹھی سے اسے پیٹنے لگا۔ وہ اسے پیٹتا رہا جب تک کہ وہ لہولہان ہوگیا۔ پھر ہم ان سب کو اٹھا کر دوسرے کمرے میں لے گئے۔ وہاں ہم تینوں لاٹھیوں سے انہیں پیٹنے لگے۔ ہم مسلسل شراب پیتے رہے، تمباکونوشی کرتے رہے اور ان پر تشدد کرتے رہے۔ پھر ہمارے میزبان نے تجویز دی کہ انہیں لیجاکر فارم کے داخلی دروازے کے قریب ایک گڑھے میں دفن کردیا جائے۔ وہ پک اپ ٹرک لے کر آیا اور ہم نے پانچوں غیر ملکی ملازمین کو اٹھا کر اس پر ڈالا اور مقررہ جگہ پر لے گئے۔ ان کے ہاتھ پاؤں رسیوں سے بندھے ہوئے تھے اور وہ زخموں سے چور تھے۔ تب ہم نے انہیں تقریباً 8فٹ گہرے گڑھے میں پھینک کر زندہ دفن کردیا۔ اس وقت فجر کی نماز کا وقت ہورہا تھا۔ میں اور میرا دوست میزبان کو فارم پر اکیلا چھوڑ کر روانہ ہو گئے۔“

مزید :

عرب دنیا -