آندھی، نوتعمیر پل گر گیا!

آندھی، نوتعمیر پل گر گیا!

  

پنڈ دادنخان کو جہلم سے ملانے کے لئے نالہ نورنگ پر نو تعمیر پل پہلی ہی آندھی میں زمین بوس ہو گیا اور تیز ہوا کو بھی برداشت نہیں کر پایا، اس سے سرکاری ٹھیکیداروں کی طرف سے غیر معیاری کاموں کا پول بھی کھل گیا ہے۔ خبر کے مطابق اس نالے پر نئے پل کی تعمیر کے لئے 9نومبر 2014ء کو سنگ بنیاد رکھا گیا یہ 33کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہوا اور اب افتتاح کے لئے تیار تھا یہ رسم وزیراعلیٰ نے ادا کرنا تھی ان سے وقت مانگا گیا تھا۔ وزیراعلیٰ سے ابھی جواب نہیں آیا تھا، اطلاع ہے کہ گزشتہ سے پیوستہ روز اس علاقے میں تیز آندھی چلی جس کے ساتھ ہی پل کے متعدد حصے پلرز سے اکھڑ کر زمین بوس ہو گئے کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ہے، پل گرنے کی وجہ ناقص تعمیر اور خراب عمارتی میٹریل کا استعمال بتائی گئی ہے، کمشنر نے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔یہ کچھ عجب نہیں ہے۔ سرکاری کاموں میں ایسا ہی ہوتا ہے یہ شکایات عام ہیں کہ متعلقہ حکام کمشن لے کر چشم پوشی کرتے اور ٹھیکیدار حضرات بچت کے لئے ناقص میٹریل استعمال کرتے ہیں۔ اس پل کی تعمیر اور اس کا گرنا تو واضح ہے، یہ کسی تحقیق کا محتاج نہیں اس کے لئے توفوری کارروائی کرکے متعلقہ ٹھیکیدار کو گرفتار کرنا چاہیے۔ تحقیقات بھی ساتھ چلتی رہے گی۔ خبر میں کسی جانی نقصان کا ذکر نہیں لیکن یہ ناممکن تو نہیں۔ پل اگر زیر استعمال ہوتا تو اس کے اوپر ٹریفک اور نیچے بھی انسان ہو سکتے تھے، اس لئے کارروائی کاغذی نہیں عملی ہونا چاہیے۔

مزید :

اداریہ -