کراچی کو امن کے ساتھ ترقیاتی منصوبے بھی دیں گے: وزیر اعلیٰ سندھ

کراچی کو امن کے ساتھ ترقیاتی منصوبے بھی دیں گے: وزیر اعلیٰ سندھ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیر اعلی سندھ سید قائم علی شاہ نے کہاہے کہ شہر کو امن فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ متعدد نئے ترقیاتی منصوبے بھی زیر غور ہیں اور آئندہ بجٹ میں کراچی کیلئے اتنی رقم رکھیں گے کہ عوام بھی مطمئن ہوجائیں گے۔کے الیکٹرک اور حیسکو کی جانب سے لوڈشیڈنگ کی شکایات ہیں لیکن بجلی فراہم کرنا وفاقی حکومت کی ذ مہ داری ہے ۔وزیر اعلی سندھ سید قائم علی شاہ نے کراچی کے مختلف علاقوں،اسپتالوں اور ہیٹ اسٹروک کیمپس کا اچانک دور ہ کیا اور اسپتالوں میں صفائی کی ناقص صورت حال پر برہمی کا اظہار کیا ۔وزیر بلدیات جام خان شورو بھی ان کے ہمراہ تھے۔وزیراعلیٰ نے تین تلوار کلفٹن پہنچے اور وہاں ہیٹ اسٹروک کیمپ کا معائنہ کیا۔ کیمپ میں پانی اور دیگر سہولیات کا جائزہ لیا۔ بعد میں وزیر اعلی سوبھراج میٹرنٹی اسپتال پہنچے۔ انہوں نے صفائی کی ناقص صورتحال پر برہمی کا اظہارکیا۔اس موقع پرمیڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے وزیر اعلی سندھ قائم شاہ نے کہا کہ شہر میں آپریشن کے باعث امن وامان کی صورتحال کافی حد تک بہتر ہوچکی ہے اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں بھی واضح کمی ہوئی ہے۔ امن و امان کے قیام کے سلسلے میں تمام ممکنہ کوششیں کررہے ہیں۔ٹارگٹ کلنگ کی چند وارداتیں ہوئی ہیں جن کا جائزہ لیاجارہا ہے ۔ رینجرز پولیس اور ٹریفک اہلکاروں پر ہونے والے حملوں کی تحقیقات بھی جاری ہیں۔قاتلوں تک جلد پہنچ جائیں گے اور ان کو نہیں بخشا جائے گا ۔ انہوں نے کہاکہ شہر کو امن فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ متعدد نئے ترقیاتی منصوبے بھی زیر غور ہیں اور آئندہ بجٹ میں کراچی کیلئے اتنی رقم رکھیں گے کہ عوام بھی مطمئن ہوجائیں گے۔وزیر اعلی سندھ نے کہاکہ 5 ماہ قبل انہوں نے شہر میں نکاسی آب اور برساتی نالوں کی صفائی کا حکم دیا تھا اور سستی برتنے پر کے ایم سی کے 2 افسران کو بھی معطل کیا گیا تھا۔ اب دوبارہ صفائی کا جائزہ لے رہے ہیں اور ہدایات بھی جاری کی ہیں کہ مون سون بارشوں سے قبل تمام تر اقدامات مکمل کر لئے جائیں۔وزیر اعلی نے کہاکہ ہیٹ اسٹروک کے بندوبست سے متعلق شکایات تھیں۔ ہیٹ اسٹروک کیمپوں میں پانی موجود ہے۔ کچھ شہریوں کی طرف سے بھی ہیٹ اسٹروکس کیمپ لگائے گئے ہیں جو قابل تعریف ہیں۔ وزیر اعلی نے کہا کہ اسپتالوں میں ادویات نہ ہونے کی شکایات بھی ملی تھیں لیکن مریضوں نے کہا ہے کہ ادویات بھی مل رہی ہیں اور ٹریٹمنٹ بھی ٹھیک ہے۔ اسپتال میں صرف اے سی سے متعلق شکایت ملی ہے۔وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ عباسی شہید اسپتال کو ساڑھے 8کروڑ روپے دیئے ہیں ۔اسپتال میں انتظامات بہتر ہیں ۔لوڈشیڈنگ کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں سید قائم علی شاہ نے کہا کہ کے الیکٹرک اور حیسکو کی جانب سے بڑے پیمانے پر لوڈشیڈنگ کی شکایات موصول ہورہی ہیں تاہم بجلی فراہم کرنا ہماری نہیں بلکہ وفاق کی ذمہ داری ہے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -