پی آئی سی کرپشن کیس،انتظامیہ نے انکوائری کمیٹی سے تعاون نہ کیا تو عدالت اپنا فیصلہ سنائے گی،ہائی کورٹ

پی آئی سی کرپشن کیس،انتظامیہ نے انکوائری کمیٹی سے تعاون نہ کیا تو عدالت اپنا ...
پی آئی سی کرپشن کیس،انتظامیہ نے انکوائری کمیٹی سے تعاون نہ کیا تو عدالت اپنا فیصلہ سنائے گی،ہائی کورٹ

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے پی آئی سی کرپشن کے معاملے کی انکوائری میں مبینہ کرپشن بے نقاب کرنے والے فارماسسٹس کوانکوائری میں شامل نہ کرنے پربرہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ ہسپتال انتظامیہ کی مبینہ کرپشن سے متعلقہ دستاویزات کو انکوائری کمیٹی نے ریکارڈ کا حصہ نہ بنایا تو عدالت اپنا فیصلہ سنائے گے۔جسٹس شمس محمود مرزا نے کیس کی سماعت شروع کی تودرخواست گزار فریحہ مجید وغیرہ کے وکیل شیراز ذکائنے عدالت کو بتایا کہ عدالتی حکم کے باوجود سیکرٹری صحت پنجاب نجم احمد شاہ نے ہسپتال انتظامیہ کی مبینہ کرپشن بے نقاب کرنے والے فارماسسٹس کو انکوائری میں شامل ہی نہیں کیا۔انہوں نے عدالت کو آگاہ کیا کہ کرپشن کے ثبوت انکوائری کمیٹی کے ذمہ داران کو فراہم کرنے کے لئے رابطہ کیا گیا مگر انہوں نے ان دستاویزات کو انکوائری کا حصہ تسلیم کرنے سے انکار کر دیا جو کہ عدالتی احکامات کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ عدالت نے مبینہ کرپشن بے نقاب کرنے والے فارماسسٹس کو انکوائری میں شامل نہ کرنے پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ اگر فارماسسٹس کو انکوائری میں شامل نہ کیا گیا اور دستاویزات کو انکوائری ریکارڈ کا حصہ نہ بنایا گیا تو عدالت اپنا فیصلہ سنائے گی۔عدالت نے کیس کی مزید سماعت 15جون تک ملتوی کرتے ہوئے سیکرٹری صحت پنجاب سے عمل درآمد رپورٹ طلب کر لی ہے۔

مزید :

لاہور -