سعودی حکومت کاوہ حکم جس سے کئی غیر ملکی بے روزگار ہوجائیں گے

سعودی حکومت کاوہ حکم جس سے کئی غیر ملکی بے روزگار ہوجائیں گے
سعودی حکومت کاوہ حکم جس سے کئی غیر ملکی بے روزگار ہوجائیں گے

  

جدہ (محمد اکرم اسد/ بیورو چیف) محکمہ سیاحت نے مدینہ منورہ کے تمام رہائشی ہوٹلوں کے مالکان کو ہدایت کی ہے کہ ضوابط کے مطابق ہوٹل کی انتظامیہ سعودی شہریوں پر مشتمل ہونی چاہیے۔ ہوٹل منیجر بھی سعودی شہری ہو اور ا س کے پاس مکمل اختیارت ہوں۔ ضوابط کی خلاف ورزی پر ہوٹل مالکان کو ایک لاکھ ریال جرمانہ یا لائسنس منسوخ کردیا جائے گا۔ اس سے سنگین سزا بھی دی جاسکتی ہے، محکمہ سیاحت مدینہ منورہ کے سربراہ انجینئر خالد الشہرانی نے کہا کہ سعودی کابینہ کے سابقہ فیصلے کے مطابق سیاحت سے وابستہ تمام رہائشی ہوٹلوں میں انتظامیہ اور منیجر سعودی شہری ہونا چاہیے البتہ لائسنس اجراءکے بعد بحالت مجبوری 4 سال تک کے لئے غیر ملکی منیجر رکھا جاسکتا ہے تاہم شرط یہ ہے کہ منیجر کے علاوہ باقی ملازمین سعودی شہری ہوں۔ اس کے علاوہ بحالت مجبوری لائسنس اجراءکے 3 سال تک کے لئے غیر ملکی افراد پر مشتمل انتظامیہ بھی رکھی جاسکتی ہے۔ ان کے مطابق ہوٹل سے مراد وہ افراد ہیں جو ہوٹل چلانے کا اختیار رکھتے ہوں اور تمام فیصلے کرنے کے مجاز ہوں۔

مزید :

عرب دنیا -