بچے کے پیدا ہوتے ہی والدین کا یہ ایک کام بڑے ہوکر ان کے قد کا تعین کرتا ہے، سائنسدانوں نے بچوں کا قد لمبا کرنے کا آسان ترین طریقہ بتادیا

بچے کے پیدا ہوتے ہی والدین کا یہ ایک کام بڑے ہوکر ان کے قد کا تعین کرتا ہے، ...
بچے کے پیدا ہوتے ہی والدین کا یہ ایک کام بڑے ہوکر ان کے قد کا تعین کرتا ہے، سائنسدانوں نے بچوں کا قد لمبا کرنے کا آسان ترین طریقہ بتادیا

  

لندن(نیوزڈیسک) ماہرین صحت کہتے ہیں کہ والدین کے قد کااثر بچوں پر پڑتا ہے اور ان کی لمبائی کے بارے میں خبر دیتا ہے۔ایک تازہ تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ ماحولیاتی اثرات کی وجہ سے پہلے ہی سال میں بچوں کے قد کے بارے میں پیشگوئی کی جاسکتی ہے۔

اسرائیلی ماہرین کی ٹیم کا کہنا ہے کہ والدین کے قد کے علاوہ بچوں کو دی گئی خوراک، کھیل کا ماحول ،صحت اور معاشرتی سرگرمیاںبھی اہم کردار اداکرتی ہیں۔پروفیسر زیو ہوچبرگ کی زیر نگرانی ماہرین نے 162جڑواں اور 106بچوں کا جائزہ لیتے ہوئے بچوں پر اثرانداز ہونے والے ماحول کا مطالعہ کیا۔ان کا کہنا ہے کہ بچوں کی ماﺅں کی خوراک، سوشل اور فیملی تال میل ان کی نشوونما پر گہرا اثر ڈالتا ہے ،اسے انسانی لچک کہا جاتا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ پیدائش کے پہلے سال والدین کا بچوں کے ساتھ پیار اور محبت والا رویہ ان کی نشوونما پر اثرانداز ہوتا ہے،اگر ان ایام میں بچوں کے ساتھ پیار اور گرمجوشی کے ساتھ پیش آیا جائے تو ان کی نشوونما اچھی ہوتی ہے اور کا قد لمبا ہوتا ہے۔اسی طرح بچوں کی دی جانے والی خوراک کی وجہ سے بھی بچوں کے قد پر اثرات پڑتے ہیں۔چھ ماہ کی عمر میں بچوں کو ٹھوس غذا مسل کر دی جائے تاکہ ان کا نظام انہضام مضبوط ہو اور ان کی نشوونما بہتر رہے۔انہیں ایسی غذائیں دی جانی چاہئیں جن میں آئرن موجود ہو،اسی طرح آلو،کدو،گاجریں،سیب اور ناشپاتی دی جائے۔اسی طرح بچوں کوآٹھ ماہ کی عمر سے چکن،گوشت،پاسٹا اور گندم سے بنی غذائیں کھلانی چاہئیں۔حمل کے دوران ماﺅں کو دی جانے والی خوراک بھی بچوں کے لمبے قد میں اہم کردار اداکرتی ہیں۔غذا کے علاوہ بچوں کو دیا جانے والا ماحول بھی ان کے قد میں اضافے کا باعث بنتا ہے۔اس عمر میں بچوں کے ساتھ کھیلنے سے بھی ان کے قد میں اضافہ ہوتا ہے۔تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ جب والدین اپنے بچوں کے ساتھ کھیلتے ہیں تو بچوں کو اپنی اہمیت کا احساس ہوتا ہے اور یہ ان کی کشوونما میں مثبت کردارادا کرتا ہے۔

مزید :

تعلیم و صحت -