فاٹا کا خبرپختونخوا میں انضمام ایک دن میں مکمل ہونے والا کام نہیں: شاہد خاقان عباسی

فاٹا کا خبرپختونخوا میں انضمام ایک دن میں مکمل ہونے والا کام نہیں: شاہد ...

جمرود(صباح نیوز)وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام پر ایک طویل عمل ہے یہ ایک دن میں ہونے والا کام نہیں یہ ایک سلسلہ ہے اس کو عمل کے ذریعے مکمل کیا جائے گا، قومی اسمبلی اور سینیٹ نے قانون پاس کردیا جب بھی مقامی حالات مکمل ہوجائیں گے تو پھر جو سہولیات پاکستان کے دیگر لوگوں کو میسر ہیں وہ فاٹا کے عوام کوبھی میسر ہونی چاہیں کیونکہ ان کے بغیر انضمام کا فائدہ ہے نہ ہوسکتا ہے لہٰذا وہی سڑکیں وہی سکول و کالج اور یونیورسٹیاں وہی ہسپتال وہی گیس اور بجلی کی سکیمیں جو پشاور اور چارسدہ یا اسلام آباد اور لاہور سمیت دیگر علاقوں میں ہیں فاٹا کے عوام کا بھی وہی حق ہے تاہم پہلے اس کیلئے وسائل مہیا کرنا ضروری ہے، فاٹا کے نظام کو چلانے کیلئے 25ارب روپے سالانہ تخمینہ یہ لگایا گیا ہے کم از کم 10سال تک ایک سو ارب روپیہ سالانہ فاٹا میں خرچ ہوگا تو پھر ساری سکیمیں مکمل ہو ں گی۔اس پر تمام جماعتیں متفق ہیں یہ کام اگلے مالی سال میں شروع کردیا جائے گا ۔ان خیالات کا اظہاروزیر اعظم نے گزشتہ روزجمرود میں 132کے وی گرڈ سٹیشن کا افتتاح پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ مجھے اس بات کی بے حدخوشی ہوئی ہے کہ ایک ایسا منصوبہ جو اسی حکومت میں شروع ہوا اور اسی کے دور میں مکمل ہوا اس منصوبے کی تعمیر پر 78ارب روپے خرچ ہوئے ہیں جبکہ یہ ابتداء ہے فاٹا میں ترقی کا سفر جاری رکھیں گے ۔وزیراعظم نے کہا کہیہاں لائن لاسز کا بہت بڑا مسئلہ ہے لہٰذا عوام بھی لائن لاسز پر قابو پانے میں حکومت کا ہاتھ بٹائیں ۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی پابندی کے باعث علاقے کیلئے گیس فراہمی منصوبہ شروع نہیں کرسکے مگریقین دلاتا ہوں کہ جمرود شیر خان اور لنڈی کوتل میں گیس مہیا کی جائے گی یہ صرف سیاسی وعدے نہیں کیونکہ مسلم لیگ( ن) وہ جماعت ہے جو کام کرکے دیتی ہے ملک بھر میں پاکستان مسلم لیگ ن کے منصوبے نظر آتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملک میں 1700کلومیٹر طویل موٹروے نیٹ ورک بن رہا ہے ۔ وسط ایشیا سے زمینی رابطہ کیلئے پشاور کا بل موٹروے بنائیں گے ۔وزیراعظم نے کہا کہ فاٹا کے عوام اور نوجوانوں کی وہی سہولیات اور مواقع میسر ہوں جو پاکستان کے کسی نوجوان کو حاصل ہیں یہ ہماری اولین ترجیع ہے اوراسی پر کام کررہے ہیں اس حوالے کئی دنوں سے اجلاس ہورہے ہیں کہ اس عمل کو کس طرح قانونی شکل دی جائے جبکہ ہماری کوشش ہے کہ اسی حکومت کے دور میں اس عمل کو شروع کردیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ یہ انقلابی قدم ہے امید ہے کہ علاقے کے عوام تعاون کریں گے فاٹا میں راہداری ٹیکس ختم کردیا گیا ۔

پشاور(صباح نیوز)وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ معاشی ترقی میں مضبوط انفسراسٹرکچر بنیادی اہمیت کا رکھتا ہے ،حکومت نے بنیادی ڈھانچے کی ترقی پر خصوصی توجہ دی، ٹھوس پالیسیوں کی بدولت اقتصادی شرح نمو6فیصد تک لے جانے میں کامیاب ہوئے ۔ پشاور میں باچاخان ایئر پورٹ کی تزئین و توسیع کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ بڑی خوشی کی بات ہے کہ ہم پشاور کو عالمی معیار کا ایئر پورٹ دینے میں کامیاب ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ باچا خان ایئر پورٹ صرف آج کی ضروریات ہی نہیں مستقبل کے تقاضے بھی پورے کرے گا۔ ایئر پورٹ میں توسیع کے باعث مسافروں کو زیادہ سہولیات فراہم ہوں گی تمام تر مشکلات کے باوجود منصوبے کو کامیابی سے پائیہ تکمیل تک پہنچایا گیا ہے ۔وزیراعظم نے کہا کہ اس کے علاوہ کافی عرصے سے زیر التواء اسلام آباد ایئر پورٹ منصوبہ ، سیالکوٹ اور ملتان ایئر پورٹ توسیع منصوبے بھی کامیابی سے مکمل کئے ہیں جبکہ کوئٹہ ایئر پورٹ توسیع منصوبے کا اگلے ہفتہ افتتاح کریں گے ۔ لاہور ایئر پورٹ توسیع منصوبہ تکمیل کے مراحل میں ہے ۔ کراچی ایئر پورٹ کی تزئین و آرائش کیلئے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔ آج الحمداللہ پاکستان میں 1700کلومیٹر طویل 6رویہ موٹرویز زیر تکمیل ہے ۔ ملک بھرمیں موٹرویز اور ہائی ویز کا نیٹ ورک بنایا جارہا ہے ۔ موجودہ حکومت 6فیصد اقتصادی شرح نمو حاصل کرنے میں کامیاب رہی بجلی کی لوڈ شیڈنگ ختم کرنے میں کامیابی ملی اور معاشی چیلنجز پر قابو پایا ۔ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے اپنے ملائیشین ہم منصب ڈاکٹر مہاتیر محمد کو ٹیلیفون کیا اور انہیں وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے پر مبارکباد دی۔وزیراعظم نے ملائیشیاء میں انتخابات کے پْرامن انعقاد اور اقتدار کی خوش اسلوبی سے منتقلی کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس سے ملائیشین قوم کی پختگی کی عکاسی ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ سیاسی اتحاد ’’پاکاتان ہاراپان‘‘ کی بے مثال کامیابی ڈاکٹر مہاتیر محمد کی فعال اور متاثر کن قیادت پر عوامی اعتماد کی مظہر ہے۔انہوں نے ملائیشیائی ہم منصب کے ساتھ پاک ملائیشیاء تعلقات پر تبادلہ خیال کیا اور معیشت، سرمایہ کاری، توانائی، دفاع اور سیاحت کے شعبوں میں مواقع کی تلاش کے ذریعے دوطرفہ تعلقات کو مزید تقویت دینے کی خواہش کا اظہار کیا۔ دریں اثناء نجی چینل ’’سما نیوز‘‘کے پروگرام ’’ندیم ملک لائیو‘‘ میں خصوصی گفتگوکرتے ہوئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا دھرنوں کے حقائق سے پوری قوم کو آگاہ کرنا ہوگا، عمران خان کی سابق آئی ایس آئی چیف لیفٹیننٹ جنرل(ر) ظہیر الاسلام سے ملاقاتیں ہوئیں ؟ ظہیر الاسلام بتا دیں وہ دھرنے کے پیچھے تھے یا نہیں؟ ہم کہتے ہیں مشاورت سے کمیشن بنا دیا جائے جس میں تمام معاملات حل کئے جائیں۔ معا ملات آئین کے تحت حل ہوتے ہیں،آئین طاقتور ہوتا ہے، آئین سے باہر جانیوالا نقصان کرتا ہے،نواز شریف کا دھرنے کے دوران ایجنسی سربراہ کا پیغام کہ استعفیٰ دے دو یا ملک چھوڑ دو عدالت میں دیا جانیوالا بیان ہے کوئی پریس بیان نہیں۔ میں بھی صوبائی حکومتوں کے کام میں مداخلت کر سکتا ہوں، میں عدلیہ کے کام میں مداخلت شروع کر دوں تو پھر ؟،ہمیں اپنے کام سے تعلق رکھنا چاہیے، انتخابات وقت پر ہوں گے، میں ایک منٹ پہلے بھی استعفیٰ نہیں دوں گا۔

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...