کاغذات نامزدگی میں تبدیلی، حکومت کو جواب داخل کرانے کے لئے مہلت

کاغذات نامزدگی میں تبدیلی، حکومت کو جواب داخل کرانے کے لئے مہلت

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے ارکان اسمبلی کے لئے کاغذات نامزدگی میں تبدیلی کے خلاف دائردرخواست پر وفاقی حکومت کو جواب داخل کرنے کے لئے مہلت دے دی ہے ۔جسٹس عائشہ اے ملک نے شہری حبیب اکرم کی درخواست پر سماعت کی جس میں عام انتخابات کے لئے امیدوار کے کاغذات میں ترمیم کو چیلنج کیا گیا ہے، درخواست گزار کے وکیل سعد رسول نے موقف اختیار کیا کہ پارلیمنٹ کو امیدوار وں کے کاغذات نامزدگی ترتیب دینے کا اختیار ہی نہیں حالانکہ یہ ذمہ داری الیکشن کمیشن کی ہے، عدالت نے وفاقی حکومت کے وکیل استفسار کیا کہ کس قانون کے تحت حکومت نے کاغذات نامزدگی کے فارم ترتیب دیئے ہیں جس پر حکومتی وکیل نے جواب داخل کرانے کے لئے مہلت مانگی، عدالتی استفسار پر الیکشن کمیشن کے نمائندے نے بتایا کہ 7روز میں نئے کاغذات نامزدگی ترتیب دیئے جاسکتے ہیں، درخواست گزار کے وکیل نے نشاندہی کی کہ کاغذات نامزدگی میں اثاثوں اور آف شور کمپنیوں کی تفصیلات حذف کر دی گئی ہیں اور سیاستدانوں کو نوازنے کے لئے ٹیکس ریٹرنز اور مقدمات کی تفصیلات بھی کاغذات نامزدگی سے خارج کر دی گئی ہیں، وکیل نے استدعا کہ ارکان اسمبلی کے لئے کاغذات نامزدگی میں ترمیم کو کالعدم قرار دیا جائے۔عدالت نے ارکان اسمبلی کے لئے کاغذات نامزدگی میں تبدیلی کے خلاف دائردرخواست پر وفاقی حکومت کو جواب داخل کرنے کیلئے 29مئی تک کی مہلت دے دی ہے۔

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...