سگریٹ سمگل کرنے سے ٹوبیکو اور فلپ مورس کو 33ارب کا فائدہ ہوا: چیئرمین پی اے سی

سگریٹ سمگل کرنے سے ٹوبیکو اور فلپ مورس کو 33ارب کا فائدہ ہوا: چیئرمین پی اے سی

اسلام آ با د (آ ئی این پی) پا رلیمنٹ کی پبلک اکا ؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) نے حکو مت کی جا نب سے ٹو بیکو انڈسٹری پر تیسرے سلیب کو متعارف کروا نے کے معا ملہ کی سپر یم کو رٹ کے سینئر جج اور آ ڈیٹر جنرل آ ف پا کستان کی سر برا ہی میں جا مع تفتیش کروا نے کی ہدا یت کر دی ، تفتیش میں معلوم کیا جا ئے پا کستا ن کے تما م ایئر پو رٹس اور با رڈرز کے ذ ر یعے کس طر یقہ سے غیر قا نو نی سگر یٹ کو اسمگل کیا جا ر ہا ہے ، سینیٹ کی قا ئمہ کمیٹی برا ئے خزا نہ اور صحت بھی مذ کو رہ معا ملہ کی تفتیش کر تے ہو ئے ذ مہ داروں کا تعین کر نا چاہئے ، تیسر ے سلیب کے متعارف کروا نے سے قو می خزا نے کو 60سے65ارب کا نقصان ہوا جبکہ پا کستان ٹو بیکو اور فلپ مو رس کو 33ارب رو پے کا فا ئدہ ہوا، چیئر مین قا ئمہ کمیٹی نے کہا کہ تیسرے سلیب کو متعارف کروا نے سے ہو نے والے نقصا نات پر وزیر خزا نہ کو گر فتار کر نا پڑ تا ہے تو اسے بھی گر فتار کر یں2017میں چو ری چھپے فنا نس بل کے ذ ریعے تیسرا سلیب متعارف کروا یا گیا ، فنا نس بل پا رلیمنٹ سے منظور ہوا، اس سا رے عمل کی ذمہ داری پا ر لیمنٹ پر ڈالنی چا ہئے۔ بدھ کو پی اے سی کا اجلاس چیئر مین کمیٹی سید خو ر شید شاہ کی صدارت میں ہوا ، کمیٹی میں حکو مت کی جا نب سے ٹو بیکو انڈسٹری پر تیسرا سلیب متعارف کروا نے کے معا ملہ پر آ ڈیٹر جنرل کی رپو رٹ کا جا ئزہ لیا گیا۔آ ڈٹ حکام نے کمیٹی کو آ گا ہ کیا کہ ٹوبیکو انڈسٹر ی کے ر یو نیو سے متعلق گز شتہ پا نچ سال کے ڈیٹا پر مشتمل تفصیلی رپو رٹ تیار کی گئی ہے۔سگر یٹ نو شی سے پیدا ہو نے وا لی بیما ریو ں کے با عث سا لا نہ ایک لا کھ پچیس ہزار اموات وا قع ہو تی ہیں، فیڈرل ایکسا ئز ڈ یو ٹی کی مد میں 2016-17میں2015-16کی نسبت ر یو نیو میں 31ارب رو پے کی کمی واقع ہو ئی،ا یف ای ڈی میں کمی پر ایف بی آ رنے اپنی حکمت عملی تبد یل کی اور 2017میں فنا نس بل کے ذ ر یعے تیسرے سلیب کو متعارف کروا یا گیا جس کے تحت ہر سگر یٹ کے پیکٹ پر50فیصد سیلز ٹیکس میں کمی وا قع ہو ئی اور سگر یٹ کی فرو خت 109ارب سے بڑ ھ کر 140ارب تک پہنچ گئی ۔ سگر یٹ کے بین الاقوا می برا نڈ فلپ مو رس کو 33ارب رو پے کا فا ئدہ ہوا، قو می خزا نے کو 6ارب روپے کا نقصان ہوا،ملک بھر میں سگر یٹ نو شی میں اضا فہ ہوا جس کے با عث مہلک بیما ر یا ں بھی بڑ ھیں، ایف ای ڈی بھی 50فیصد تک گر گئی، دوسرے سلیب میں صرف ایک برا نڈ کا سگر یٹ رہ گیا جبکہ دیگر برا نڈز تیسرے سلیب میں آ گئے جس سے سگر یٹ کی قیمتو ں میں کمی واقع ہو ئی،تیسرے سلیب میں سگریٹس کے آ نے سے سگر یٹ نو شی کی حو صلہ افزا ئی ہو ئی، اس عمل سے قو می خزا نے کو 50سے 60ارب رو پے کا نقصان ہوا۔چیئر مین کمیٹی خور شید شا ہ نے کہا 2017میں چو ری چھپے فنا نس بل کے ذ ریعے تیسرا سلیب متعارف کروا یا گیا ، فنا نس بل پا رلیمنٹ سے منظور ہوا، اس سا رے عمل کیذمہ داری پا ر لیمنٹ پر ڈالنی چا ہیئے، اگر وزیر خزا نہ کو گر فتار کر ناپڑ تا ہے تو اسے بھی گر فتار کر یں، پا رلیمنٹ کے 342ارکان اس سا رے عمل کے ذ مہ دار ہیں۔ نو ید قمر نے کہا کہ آ پ کے کہنے کا مطلب ہے کہ سب غلط کام پا رلیمنٹ کر تی ہے جب کہ آ پ لو گ صحیح کام کر تے ہیں،یہ صرف بلیم گیم ہے کبھی پا رلیمنٹ پر الزام لگا دو کبھی وزارت صحت پر ذ مہ داری ڈال دو۔

مزید : صفحہ آخر