طلال چودھری توہین عدالت کیس:سپریم کورٹ نے مزید گواہوں کو پیش کرنے کا حکم دے کر سماعت 19 جون تک ملتوی کر دی

طلال چودھری توہین عدالت کیس:سپریم کورٹ نے مزید گواہوں کو پیش کرنے کا حکم دے ...
طلال چودھری توہین عدالت کیس:سپریم کورٹ نے مزید گواہوں کو پیش کرنے کا حکم دے کر سماعت 19 جون تک ملتوی کر دی

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) طلال چودھری توہین عدالت کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے اپنے ریماکس میں کہا کہ وکیل کی بات پرچلناہے یاآخرت بھی دیکھنی ہے؟عدالت نے مزید گواہوں کو پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 19 جون تک ملتوی کر دی۔

تفصیلات کے مطابق طلال چودھری توہین عدالت کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں جسٹس گلزاراحمدکی سربراہی میں ہوئی ۔طلال چودھری کے گواہ اسراراحمد خان نے عدالت کے روبرو موقف اختیار کیا کہ 27 جنوری کے جلسے میں اسٹیج پرموجودتھا، قائدین جلسہ گاہ میں 4 بجے تشریف لائے،ان کی آمد میں تاخیرکے باعث طلال چودھری نے کئی بارتقاریرکیں جن میں تسلسل نہیں تھا، جلسے کے آغاز سے اختتام تک وہاں موجودرہا،میری موجودگی میں طلال چودھری نے عدلیہ مخالف کچھ نہیں کہا۔اس موقع پر جسٹس فیصل عرب کا کہنا تھا کہ گواہ کے بیان پر فیصلہ نہیں کرنا،عدالت ویڈیوبھی دیکھے گی جس پروکیل صفائی بولے اگر ویڈیو پر فیصلہ کرنا ہے تواب تک کردیتے ۔استغاثہ کے وکیل نے عدالت میں سوال کیا کہ کیا طلال چودھری نے پی سی او کے بتوں کو نکالنے کی بات کی؟گواہ اسرار احمد کا کہنا تھا کہ یہ الفاظ طلال چودھری نے ٹکڑوں میں کہے،سیاق وسباق سے ہٹ کرچلائے گئے،جسٹس گلزاراحمد نے ریماکس دئیے کہ وکیل کی بات پرچلناہے یاآخرت بھی دیکھنی ہے؟ یہ الفاظ کس کے تھے ،اس کا نام بتا دیں۔

سپریم کورٹ میںمشیروزیراعظم مصدق ملک بھی بطورگواہ پیش ہوئے ان کا کہنا تھا کہ 27جنوری کو جڑانوالہ جلسہ میں موجود تھا، طلال چودھری بھی جلسے میں تھے،انہوںنے جلسے سے کئی بارخطاب کیا، وکیل استغاثہ نے سوا ل کیا کہ طلال چودھری نے پی سی او کے بتوں کی بات نہیں کی؟مصدق ملک کا مزید کہنا تھا کہ طلال چودھری کی تقاریرکاکلپ دیکھا ہے،انہوںنے اس انداز سے بات نہیں کی مختلف کلپ جوڑ کر نشر کیے گئے۔، وکیل کامران مرتضی نے عدالت سے استدعا کی کہ باقی گواہ لانے کا وقت دے دیںجسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے کیس کی سماعت 19 جون تک ملتوی کر دی۔

مزید : اہم خبریں /قومی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...