ایک لڑکی جس نے 3 مردوں کی زندگی تباہ کردی، اور طریقہ بھی ایسا شرمناک ترین کہ جان کر مرد بھی اپنے کانوں کو ہاتھ لگائیں

ایک لڑکی جس نے 3 مردوں کی زندگی تباہ کردی، اور طریقہ بھی ایسا شرمناک ترین کہ ...
ایک لڑکی جس نے 3 مردوں کی زندگی تباہ کردی، اور طریقہ بھی ایسا شرمناک ترین کہ جان کر مرد بھی اپنے کانوں کو ہاتھ لگائیں

لندن(نیوز ڈیسک) مردوں کی جانب سے خواتین کا جنسی استحصال کوئی نئی بات نہیں مگر برطانیہ میں ایک خاتون نے پے در پے تین مردوں کو جنسی الزامات کے چکر میں ایسا پھنسایا کہ بیچاروں کی زندگی ہی برباد کر ڈالی۔ تین آدمیوں پر ریپ کے جھوٹے الزامات لگانے کے باوجود یہ کمال ڈرامے بازی سے سزا سے بھی بچ نکلی تھی، البتہ ملزمان کی مسلسل فریاد کے باعث بالآخر چار سال بعد یہ پھر سے قانون کے کٹہرے میں ہے۔

میل آن لائن کے مطابق 30 سالہ اینا کوسٹن نے تین افراد پر ریپ کا الزام لگایا تھا جبکہ ایک اور پر تشدد کا الزام عائد کیا تھا۔ ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا اور چار سال تک مقدمے کی کاروائی چلتی رہی لیکن الزامات ثابت نا ہو سکے۔ بالآخر لندن اپیلز کورٹ میں ایک ملزم نے شواہد اور ثبوتوں کے ساتھ ثابت کردیا کہ جس وقت ریپ کا الزام عائد کیا گیا اس وقت وہ چھٹیاں منانے ملک سے باہر گیا ہوا تھا۔ ایک اور ملزم نے ثابت کیا کہ جس وقت ریپ کا الزام عائد کیا گیا اس وقت وہ اینا کے گھر پرنہیں بلکہ اپنے گھر پر موجود تھا اور ٹی وی دیکھ رہا تھا۔ تیسرے ملزم نے بھی شواہد فراہم کئے کہ ریپ کا جو وقت بتایا گیا اس وقت وہ ایک ہوٹل میں کھانا کھا رہا تھا۔

لیڈی جسٹس ہالٹ نے اس بات سے اتفاق کیا کہ اینا کے الزامات بے بنیاد تھے اور اس بات کا عندیہ دیا کہ جھوٹے الزامات کے ذریعے ملزمان کے لئے بدترین شرمندگی اور مسائل کا سبب بننے کے جرم میں اسے سخت سزاسنائی جائے گی۔ ملزمان کے وکلاءنے توقع ظاہر کی ہے کہ اینا کو کم از کم 4سال قید کی سزا ضرور ہوگی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...