’پاکستان ٹیم کو سیمی فائنل کھیلتا دیکھ رہا ہوں‘ میگا ایونٹ میں کیا کرنا ہوگا؟ شاہد آفریدی نے بتادیا

’پاکستان ٹیم کو سیمی فائنل کھیلتا دیکھ رہا ہوں‘ میگا ایونٹ میں کیا کرنا ...
’پاکستان ٹیم کو سیمی فائنل کھیلتا دیکھ رہا ہوں‘ میگا ایونٹ میں کیا کرنا ہوگا؟ شاہد آفریدی نے بتادیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شاہد آفریدی کا کہنا ہے کہ قومی ٹیم کی تجربے کی کمی پوری ہوگئی ہے اور بلے باز اچھی فارم میں ہیں اس لیے خراب پرفارمنس کا کوئی بہانہ باقی نہیں بچتا۔ پاکستان سے نہ کھیلنے والی بات بے وقوف لوگ ہی کرتے ہیں، وہ پاکستان ٹیم کو ورلڈ کپ کا سیمی فائنل کھیلتے ہوئے دیکھ رہے ہیں ۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہد آفریدی نے کہا کہ وہاب ریاض کو ہیڈ کوچ اور کپتان خواب میں نظر آرہے ہیں، امید ہے ان کے خواب پورے ہوں گے اور ورلڈ کپ میں پاکستان اچھا پرفارم کرے گا۔ انہوں نے شعیب ملک سے کہا ہے کہ اپنے آخری ایونٹ کو یاد گار بنائے،سرفراز احمد کو ورلڈ کپ میں اوپر کے نمبرز پر کھیلنا ہوگا،،کھلاڑیوں کے پاس موقع ہے کہ وہ اپنی صلاحیتوں کا کھل کا اظہارکریں، ہماری ٹیم کو آل راؤنڈرزکی ضرورت ہے، ہمارے پاس عبدالرزاق جیسا آل راؤنڈرنہیں ہے۔

انہوں نے ورلڈ کپ سکواڈ میں شامل نہ کیے جانے پر فاسٹ باﺅلر جنید خان کی جانب سے کیے جانے والے احتجاج کو نامناسب قرار دیا اور کہا کہ جنید خان نے جو انداز اپنایا وہ نہیں کرنا چاہیے تھا۔ خیال رہے کہ جنید خان نے ورلڈ کپ سکواڈ میں جگہ نہ ملنے پر اپنے منہ پر پٹی باندھ کر تصویر شیئر کی تھی ۔

پاک بھارت کرکٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے شاہد آفریدی نے کہا کہ پاکستان سے نہ کھیلنے والی بات بے وقوف لوگ ہی کرتے ہیں، بھارت کے گوتم گمبھیر نے عقل والی بات نہیں کی ۔ بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کو اپنی سوچ بدلنی ہوگی ، دونوں ملکوں کو خود ہی مسائل حل کرنے ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان مشکل دور سے گزررہا ہے،آگے مزید مشکل وقت آئے گا، وقت آگیا ہے کہ اپوزیشن اور حکومت مل کر کام کریں۔

قبل ازیں ایک ویڈیو پیغام میں شاہد آفریدی نے کہا کہ تجربے کی کمی کے باعث میگا ایونٹ سے قبل ہماری باﺅلنگ کومشکلات کا سامنا رہا مگر اب وہاب ریاض، شاداب خان اور محمد عامر کی ٹیم میں واپسی کے بعد تجربے کی کمی پوری ہوگئی اور خراب پرفارمنس کا کوئی بھی بہانہ باقی نہیں بچا ۔ آفریدی نے کہا وہ سمجھتے ہیں کہ اس وقت قومی ٹیم کا بہترین کمبی نیشن ہے ، اچھی بات یہ ہے کہ اس بار پاکستانی بیٹسمین اچھی فارم میں ہیں، انگلینڈ سے بڑے مارجن سے نہیں ہارے اس لیے اب کوئی جوا ز نہیں ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ وہ قومی ٹیم کو سیمی فائنل کھیلتے ہوئے دیکھ رہے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ گرین شرٹس فائنل بھی کھیلیں گے۔

مزید : کھیل