نشترہسپتال،مزید7ڈاکٹرز میں کروناوائرس کی تصدیق

نشترہسپتال،مزید7ڈاکٹرز میں کروناوائرس کی تصدیق

  

ملتان(نمائندہ خصوصی) نشتر ہسپتال میں انتظامی نا اہلی کے باعث گزشتہ ماہ اپریل میں 28 ڈاکٹر کورونا میں مبتلا ہوئے جو بعد میں صحت یاب ہو کر دوبارہ ڈیوٹیاں دے رہے ہیں تاہم اب نشتر ہسپتال کے مزید 07 ڈاکٹروں میں کورونا کی تصدیق ہوئی ہے جن میں پیڈز میڈیسن کے ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر نصرت بزدار،یورالوجی کے ڈاکٹر رانا انصر،پیڈر وارڈ ڈاکٹر توقیر اور ڈاکٹر راشد،وارڈ پانچ کے ڈاکٹر حنبل،وارڈ 15 کے ڈاکٹر شاہد اور حال ہی میں نشتر سے ہاوس جاب (بقیہ نمبر44صفحہ6پر)

مکمل کرنے والی ڈاکٹر صبا شامل ہیں،جبکہ آئی سی یو کے ڈاکٹر ذوالقرنین کی نجی لیبارٹری سے کورونا پازیٹیو رپورٹ آنے پر انہیں آئی سولیشن وارڈ منتقل کیا گیا جہاں ان کی نشتر لیبارٹری سے کورونا کی پہلی رپورٹ نیگیٹیو آئی ہیاس حوالے سے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر فاران اسلم کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر ذوالقرنین اس وقت آکسیجن پر ہیں اور حالت تشویشناک ہے جبکہ نشتر انتظامیہ کی ناقص حکمت عملی کے باعث ایک مرتبہ پھر ڈاکٹر کورونا وائرس میں مبتلا ہو رہے ہیں،پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے رہنما ڈاکٹر ذوالقرنین نے بتایا کہ ڈاکٹر حنبل کے والد بھابھی اور ایک گھریلو ملازم بھی کورونا میں مبتلا ہو چکے ہیں،حالات خرابی کی طرف جا رہے ہیں،جبکہ برن یونٹ میں ہی زیر علاج کورونا میں مبتلا مظفر گڑھ کے رہائشی 40 سالہ غضنفر کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے،ادھر فوکل پرسن نشتر ہسپتال کے مطابق نشتر ہسپتال کے چھ آئی سو لیشن وارڈز میں اس وقت کورونا میں مبتلا 43 مریض زیر علاج ہیں جبکہ شبہ میں زیر علاج 18 مریضوں کی رپورٹس کا انتظار ہے،جبکہ برن یونٹ میں کورونا مریضوں کے لئے 8 بستروں پر مشتمل علیحدہ وارڈ مختص کر دیا گیا ہیبرن یونٹ کے طبی عملہ اورمریضوں میں کورناکی تصدیق کے لئے آوازبلندکرنے والاڈاکٹرانصاف سے محروم ہے۔

تصدیق

مزید :

ملتان صفحہ آخر -