اے ٹی ایم کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے سے کروڑوں روپے کی بچت ممکن

  اے ٹی ایم کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے سے کروڑوں روپے کی بچت ممکن

  

لاہور(اے پی پی) پاکستان انجینئرنگ کونسل کے ترجمان نے کہا ہے کہ اگر پاکستان بھر میں تمام اے ٹی ایم مشینوں کو شمسی توانائی پر منتقل کر دیا جائے تو اس سے سالانہ کروڑوں روپے کی بجلی کی بچت کی جا سکتی ہے جبکہ شمسی توانائی کے ذریعے اے ٹی ایم مشینوں کو چلانے کے باعث ان کو ایئر کنڈیشنرز کی ضرورت بھی نہیں رہتی۔انہوں نے اے پی پی کو بتایا کہ اے ٹی ایم پر چلنے والی مشینیں کم از کم اڑھائی سے 3 لاکھ روپے فی کس سالانہ کی بجلی استعمال کرتی ہیں۔ انہوں نے بتا یاکہ پرانی مشینوں کی جگہ بائیو میٹرک نظام پرمشتمل مشینوں کی تنصیب بھی سود مند ثابت ہو سکتی ہے۔انہوں نے بتایا کہ قبل ازیں تمام موبائل فون کمپنیوں کو بھی ہدائت کی گئی تھی کہ وہ اپنے موبائل فون ٹاور متبادل توانائی کے نظام پر منتقل کرلیں تاکہ بجلی کی کمی پر قابو پانے میں مدد مل سکے لیکن نا معلوم وجوہ کی بناء پر اس حکمنامے پرمکمل عملدرآمد نہ ہو سکا۔انہوں نے بتا یاکہ جب تک متبادل توانائی کے ذرائع سے استفادہ نہیں کیا جائے گا اس وقت تک بجلی کی کمی پر قابو پانے میں بھی خاطر خواہ کامیابی نہیں ہو سکے گی اس لئے بجلی کی کمی دور کرنے کے لئے یہ عمل بہت زیادہ ضروری ہے۔

مزید :

کامرس -