طیارہ حادثہ، پائلٹ اور اپروچ ٹاور کے درمیان گفتگو کا مزید حصہ بھی مل گیا، کیا کہا گیا؟ آپ بھی جانئے

طیارہ حادثہ، پائلٹ اور اپروچ ٹاور کے درمیان گفتگو کا مزید حصہ بھی مل گیا، کیا ...
طیارہ حادثہ، پائلٹ اور اپروچ ٹاور کے درمیان گفتگو کا مزید حصہ بھی مل گیا، کیا کہا گیا؟ آپ بھی جانئے

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) شہر قائد میں تباہ ہونے والے طیارہ حادثے کی تحقیقات میں اہم پیشرفت سامنے آگئی۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق  پی کے 8303 حادثے کی تحقیقات کے دوران اہم پیشرفت ہوئی ہے۔ تحقیقاتی ٹیموں کو  اپروچ راڈاراورپائلٹ کےدرمیان  ہونے والی مزید گفتگو مل گئی۔  اپروچ ٹاور اور پائلٹ کے درمیان ہونے والی گفتگو کے مطابق  اپروچ راڈارنےپائلٹ کو3 بارلینڈنگ موخرکرنےکاکہا  لیکن  پائلٹ نےاپروچ راڈارکی ہدایات کونظراندازکیا۔

خیال رہے کہ اس سے پہلے بھی پی کے 8303 اور کنٹرول ٹاور کے درمیان گفتگو سامنے آئی تھی۔ سوشل مٰیڈیا پر وائرل ہونیوالی آڈیو میں سنا جا سکتا ہے کہ کنٹرول ٹاور پر موجود اہلکار استفسار کرتا ہے کہ "8303" جس پر پائلٹ کی جانب سے "جی سر" کا جواب ملتا ہے ۔ کنٹرول ٹاور سے بتایا جاتا ہے کہ ایسا لگ رہاہے کہ آپ بائیں طرف جارہے ہیں، پائلٹ بتاتا ہے کہ ہم براہ راست لینڈنگ کیلئے جارہے ہیں، ہمارا انجن جواب دے چکا ہے ۔

 کنٹرول ٹاور کی طرف سے بتایا جاتاہے کہ " 25 پر لینڈنگ کے لیے رن وے دستیاب ہے ، پائلٹ کی طرف سے جواب میں راجر کی آواز آٹی ہے اور ساتھ ہی چار دفعہ مے ڈے ، مے ڈے بولتا ہے اور پھر پاکستان 8303 بتانے کے بعد رابطہ ختم ہوجاتاہے ۔ کنٹرول ٹاور کی طرف سے بتایا جاتا ہے کہ 8303 راجر دونوں ہی رن ویز لینڈکرنے کے لیے دستیاب ہیں لیکن رابطہ ختم ہوچکا ہوتا ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -سندھ -کراچی -