شاہد آفریدی کی نماز پڑھتے ہوئے تصویر وائرل،صحافی انصار عباسی اور عمر چیمہ میں بحث چھڑ گئی

شاہد آفریدی کی نماز پڑھتے ہوئے تصویر وائرل،صحافی انصار عباسی اور عمر چیمہ ...
شاہد آفریدی کی نماز پڑھتے ہوئے تصویر وائرل،صحافی انصار عباسی اور عمر چیمہ میں بحث چھڑ گئی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق آل راونڈرشاہد آفریدی کی نماز پڑھتے ہوئے تصویر انٹر نیٹ پروائرل ہوئی تو صحافی انصار عباسی اور عمر چیمہ کے درمیان بحث چھڑ گئی مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر صحافی عمر چیمہ نے شاہد آفریدی کے سڑک کنارے نماز پڑؒھتے ہوئے تصویر شیئز کی اور کہاوہ نیکی جو کیمرے کی موجودگی میں کی جائے اس نیکی سے ہزار درجے بہتر ہے جو کیمرے کی آنکھ سے اوجھل ہو۔اس پر انصار عباسی نے کہا عمر بھائی دلوں کے حال صرف اللہ جانتا ہے۔اگر مجھے کہیں نماز پڑھتے شاہد آفریدی ملتا تو میں بھی اُس کی تصویر بنا کر اُسے وائرل کرتا تاکہ دوسروں کو بھی نماز کی ترغیب دی جائے۔نماز چھپ کر پڑھنے کی عبادت نہیں بلکہ جب وقت آئے جہاں بھی آپ ہیں نماز پڑھیں سڑک کے کنارے، سحرا میں، جہاز میں۔اس کے جواب میں عمر چیمہ نے کہا کہیہ پہلا واقعہ نہیں آٹے کے تھیلوں کی تقسیم ہو، جہاز گرنے والی جگہ پر جانا ہو تو کیمرہ ساتھ ہوتا ہے یہ اتفاق ہے کہ جدھر جائیں کیمرہ مین انتظار میں ہو، ہمارے ملک میں نماز پڑھنے والوں کی نہیں صاحب کردار لوگوں کی کمی ہے ہمارا قومی المیہ ہے کہ حمایت یزید کی اور نعرے حسین کے لگاتے ہیں۔اس پر انصار عباسی نے کہا جہاں شاہد آفریدی جیسا مشہور شخص جائے گا وہاں ہر کوئی تصویر بنائے گا اور یہی ہوتا ہے۔ دوسرا ہم سب انسان ہیں اور کوئی غلطیوں سے پاک نہیں۔ جو اچھا کام کرے اُس کی تعریف کریں اور شاہد آفریدی ماء شااللہ اچھے کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہا ہے جس سے دوسروں کو ترغیب ملتی ہے۔اس کے جواب میں عمر چیمہ نے کہا کہ نماز ہر شخص کا نجی معاملہ ہے لیکن چونکہ اسکی تشہیر سے نیک نامی میں اضافہ ہوتا ہے لہذا تشہیر ہونی چاہیے تاہم اگر ایسے عمل کی تشہیر ہو جس سے عوام کے سامنے چھپا ہوا چہرہ عیاں ہو تو اسکی تشہیر نہیں ہونی چاہئیے کیونکہ نجی معاملہ ہے ہم نے بھی کیسے دوہرے معیار قائم کئے ہوئے ہیں۔

مزید :

قومی -