حکومت سرمایہ کاری پر غلط اعدادوشمار پیش کررہی ہے، جاوید قصوری

      حکومت سرمایہ کاری پر غلط اعدادوشمار پیش کررہی ہے، جاوید قصوری

  

لاہور (نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ رواں مالی سال کے پہلے دس ماہ کے دوران بیرونی سرمایہ کاری میں براہ راست 32فیصد کمی ہوچکی جبکہ حکومت محض جھوٹے اعداد و شمار عوام کے سامنے پیش کرکے گمراہ کرر ہی ہے۔ چندمخصوص حلقوں کے لیے فنڈز فراہم کرنا شرمناک اقدام ہے۔ حکومت کے اتحادی بھی تنقید کے نشتر چلارہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزمختلف پروگرامات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا ہے کہ ملک معاشی لحاظ سے مفلوج ہو کر رہ گیا ہے۔ جب سے پی ٹی آئی کی حکومت بر سر اقتدار آئی ہے کوئی ایک شعبہ بھی ایسا نہیں جس نے تسلی بخش کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہو۔

مہنگائی اتنی ہوچکی ہے کہ غریب عوام کے لیے جسم و جان کا رشتہ برقرار رکھنا بھی مشکل ہوگیا ہے۔ یومیہ 20افراد خود کشیاں کررہے ہیں۔ نصف سے زائد آبادی سطح غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہے۔ عوام سوال پوچھتے ہیں کہ کہاں ہے وہ تبدیلی جس کے وعدے تحریک انصاف کے چیئرمین نے کیے تھے؟ انہوں نے کہا کہ حکومت کے اپنے وزراء، مشیروں اور معاونین خصوصی کی کرپشن کے معاملات سامنے آچکے ہیں۔ ادویات کا سکینڈل، گندم کا سکینڈل، چینی کا بحران، آٹے کی قلت، پٹرولیم مصنوعات کا سکینڈل، رنگ روڈ منصوبہ اور اس قسم کے درجنوں معاملات قوم کے سامنے آچکے ہیں۔ جن میں حکومتی افراد ملوث ہیں۔ مگر کسی کے خلاف تادیبی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی۔ محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ نیب جن افراد پر بھی کیس بناتا ہے، وہ عدالتوں سے عد م ثبوت ہونے کی بنا پر آزاد ہوجاتے ہیں۔ ڈھائی برسوں میں 28فیصد کاروبار بند ہوچکے ہیں جبکہ 59فیصد لوگ بے روزگار ہوئے ہیں۔ حکومت 146کھرب روپے کے قرضوں کا بوجھ عوام پر لاد چکی ہے۔ آنے والے بجٹ میں بھی عوام کے لیے خیر کی توقع نہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -