جعلی زرعی ادویات کے کاروبار میں ملوث افراد کے خلاف کاروائیاں 

 جعلی زرعی ادویات کے کاروبار میں ملوث افراد کے خلاف کاروائیاں 

  

 لاہور(سٹی رپورٹر )  وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کی خصوصی ہدایات کے مطابق جعلی زرعی ادویات کے کاروبار میں ملوث افراد کے خلاف صوبہ بھر میں کاروائیاں کی جاری ہیں۔ایسے ہی ایک آپریشن کے دوران ڈائریکٹر جنرل زراعت پیسٹ وارننگ اینڈ کوالٹی کنٹرول آف پیسٹی سائیڈز پنجاب ڈاکٹر محمد اسلم کی سربراہی میں ڈپٹی ڈائریکٹر پیسٹ وارننگ ساہیوال شاہد قریشی کی نگرانی میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر پیسٹ وارننگ پاکپتن میاں ظہوراحمدنے ہمراہ ایگریکلچر آفیسر پیسٹ وارننگ عارف والانے  جعلی زرعی ادویات کی فروخت  اور غیر قانونی سٹوریج میں ملوث افراد کے خلاف خفیہ اطلاع ملنے پر ہمراہ پولیس پارٹی چھاپہ مارا اور اس دوران غیر قانونی طور پر سٹور شدہ7 نجی کمپنیوں کی43لاکھ روپے مالیت کی جعلی زرعی ادویات کو برآمد کر کے ضبط کیا گیا اور اس مکروہ کاروبار میں ملوث افرادکے خلاف ایف آئی آر کا اندارج عمل میں لایا گیااور موقع پر دو ملزمان کو حراست میں لیا گیا۔ ملزمان سے جعلی زرعی ادویات و لیبل کثیر تعداد میں برآمد کئے گئے ہیں۔ ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے مزید کہا کہ جعلی زرعی مداخل فروخت کرنے والے مافیہ کے خلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جارہا ہے اور اس گھناؤنے کاروبار میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جارہی ہے۔حکومت پنجاب جعلی زرعی ادویات کا کاروبار کرنے والوں کے خلاف زیرو ٹالرلینس پالیسی کے اصول پر عمل پیرا ہے اور اس کاروبار کی بیخ کنی کیلئے تمام ممکنہ کاروائیاں عمل میں لائی جارہی ہیں۔اس ضمن میں محکمہ زراعت ٹھوس شواہد کی بنا پر ملزمان کے خلاف ہر سطح پر اپنی کاروائی جاری رکھے ہوئے ہے اور جعلی زرعی ادویات کے دھندے میں ملّوث افراد کوقانون کے حوالے کیا جا رہا ہے۔ترجمان نے مزید کہا کہ عوام جعلی زرعی مداخل فروخت کرنے والے عناصر کے خلاف شکایات بذریعہ ایس ایم ایس/ واٹس ایپ پر0300-2955539 کر سکتے ہیں۔ایسے تمام عناصر کے خلاف اطلاع موصول ہونے کے24 گھنٹے کے اندر کاروائی عمل میں لائی جاتی ہے

مزید :

کامرس -