صوبائی دارلحکومت پشاور میں اتوار کو بھی کاروبار زندگی مکمل طور پر بند رہی

صوبائی دارلحکومت پشاور میں اتوار کو بھی کاروبار زندگی مکمل طور پر بند رہی

  

پشاور(سٹی رپورٹر)صوبائی دارلحکومت  پشاور میں اتوار کو بھی کاروبار زندگی مکمل طور پر بند رہی، شہر کے بڑے بازار اور کاروباری مراکز بندرہے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک بھی معمول سے کم نظر آئی۔واضح رہے کہ این سی او سی کی  سفارشات پر خیبرپختونخوا  حکومت نے کرونا ایس او پیز سختی سے عملدرآمد کا فیصلہ کیا ہے،جس کے تحت ہفتہ وار دو دن بروز ہفتہ اور اتوار پشاور شہر سمیت صوبے کے دیگر تمام شہروں اور قصبوں میں لاک ڈاون کے فیصلے پر سختی سے عملدرآمدہورہا ہے۔پشاور شہر میں کوروان کیسیز میں واضح  کمی کے باوجود  انتظامیہ ہفتہ وار دو روزہ لاک ڈاون کے سلسلے کو برقرار کھ کر صورتحال کو مکمل کنٹرول کرنے کے لئے کوشاں نظر آرہی ہے۔طبی ماہرین نے لاک ڈاون کے مثبت آثرات پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے حکومت کو مشورہ دیا ہے کہ ابھی ایس او پیز پر عملدرآمد کے ضمن میں کسی قسم کی نرمی یا رعایت سے گریز کیا جائے۔ماہرین نے مزید کہا ہے کہ اگرچہ خیبر پختونخو ااور پنجاب و اسلام اباد میں صورتحال کافی بہتر ہے  لیکن ملک کے سب سے بڑی شہر کراچی سمیت اندرون سندہ اور بلوچستان کی صورتحال اطمینان بخش نہیں ہے۔ماہرین نے مزید کہا ہے ان حالات میں خیبر پختونخوا اور پنجاب میں کسی قسمکا خطرہ مول لینے کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔دوسری طرف کاروباری طبقے نے دو روزہ لاک ڈاون کو کاروبار دشمن اقدا م گردانتے ہوئے لاک داون کے مکمل خاتمے کا مطالبہ کیا 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -